• عقائد و ایمانیات >> اسلامی عقائد

    سوال نمبر: 29508

    عنوان: (۱) کیا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے کبھی کوئی غیب کی بات نہیں بتائی جو بغیر وحی کے ہو ؟ (۲) کیا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم اللہ سے ڈائریکٹ بات کرتے تھے ؟

    سوال: (۱) کیا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے کبھی کوئی غیب کی بات نہیں بتائی جو بغیر وحی کے ہو ؟ (۲) کیا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم اللہ سے ڈائریکٹ بات کرتے تھے ؟ براہ کرم، مدلل جواب دیں۔

    جواب نمبر: 29508

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(ل): 490=376-4/1432 (۱) رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے غیب کے حوالے سے جو بات بتائی ہے وہ سب اللہ کی طرف سے وحی کیا ہوا ہے، اللہ کے نبی نے اپنی طرف سے غیب کی کوئی بات نہیں بتائی۔ البتہ وحی کی بہت سی اقسام ہیں جن کا مفصلاً ذکر معارف القرآن سورہٴ نجم کے شروع میں مذکور ہے۔ (۲) شب معراج میں بعض علماء کا قول ہے کہ رسو ل اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے حق تعالیٰ سے بالمشافہ کلام کیا ہے، ا س کے علاوہ مواقع میں حق تعالیٰ سے کلام کبھی بذریعہ وحی کبھی من وراء حجاب (جاگتے ہوئے کوئی کلام پس پردہ سننا) اور کبھی کسی فرشتہ کے واسطے سے ہوتا تھا جس کا تذکرہ قرآن شریف کی آیت میں موجود ہے ﴿وَمَا کَانَ لِبَشَرٍ اَنْ یُکَلِّمَہُ اللّٰہُ اِلَّا وَحْیًا اَوْ مِنْ وَرَآءِ حِجَابٍ اَوْ یُرْسِلَ رَسُوْلًا فَیُوْحِیَ بِاِذْنِہِ مَا یَشَآءُ اِنَّہُ عَلِیٌّ حَکِیْمٌ﴾․


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند