• عقائد و ایمانیات >> اسلامی عقائد

    سوال نمبر: 145374

    عنوان: بیوی کے انتقال کے بعد اگر ان کی چھوٹی بہن سے نکاح کریں تو کیا کل قیامت میں وہ مجھے ملے گی یا نہیں؟

    سوال: (۱) میری بیوی کا انتقال شادی کے ۶/سال بعد ہو گیا ہے، ابھی میرے ۵/ سال کا ایک بیٹا اور ڈیڑھ مہینے کا ایک بیٹا ہے، اور گھر والوں کی مرضی ہے کہ میں ان کی چھوٹی بہن سے نکاح کرلوں، اور میری بیوی نے بھی اپنی زندگی میں مجھے یہ بات کہی تھی کہ اگر مجھے کچھ ہو جائے تو میری کسی بہن سے نکاح کرلینا، لیکن میں اس سے بے حد محبت کرتا تھا اور کرتا ہوں، تو میرا سوال یہ ہے کہ اگر میں ان کی بہن سے نکاح کرتا ہوں تو کیا کل قیامت میں وہ مجھے ملے گی یا نہیں؟ یا صرف ان کی چھوٹی بہن ہی ملے گی؟ برائے مہربانی حدیث اور قرآن کی روشنی میں تفصیل سے بتادیں۔ بہت الجھنوں میں ہوں، (۲) اور کوئی ایسا طریقہ بتادیں جس سے کہ میں صبر کر سکوں، اور میں ان کے نام سے کہاں کہاں خرچ کروں تاکہ انہیں زیادہ سے زیادہ ثواب پہونچے اور انہیں سکون ملے۔

    جواب نمبر: 14537401-Sep-2020 : تاریخ اشاعت

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 033-062/L=2/1438

     

    (۱، ۲) صورتِ مسئولہ میں اگر آپ کی متوفیہ بیوی کی چھوٹی بہن بھی تا وقتِ حیات آپ کی زوجیت میں رہتی ہیں تو ان شاء اللہ بروزِ قیامت آپ کو دونوں بہنیں بحیثیتِ زوجہ مل جائیں گی، اور صبر کرنے کے لیے آپ یہ خیال کریں کہ اللہ نے ایک خاص مدت تک کے لیے ان کو دنیا میں بھیجا تھا اور جب ان کی زندگی پوری ہوگئی اللہ نے انہیں اپنے پاس بلا لیا اور یہ معاملہ صرف انہیں کے ساتھ خاص نہیں بلکہ ہر ایک کو اللہ کے پاس جانا ہے ہمیں تو اللہ کے فیصلہ پر ہر حال راضی رہنا چاہئے؛ البتہ تلاوتِ قرآن، صدقہ و دیگر اعمال خیر ان کے نام سے کرکے ان کو ثواب پہنچاتے رہیں اور اعمال خیر میں سب سے بہتر مسجد یا مدرسہ وغیرہ کی تعمیر میں حصہ لینا ہے کہ جب تک یہ باقی رہے گا ثواب ملتا رہے گا۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند