• معاملات >> سود و انشورنس

    سوال نمبر: 69285

    عنوان: رشوت دیئے بغیر اپنا حق لینے کا کوئی راستہ نہ ہو تو کیا کریں؟

    سوال: میں ایک پرائیویٹ کمپنی میں الیکٹریکل انجینئر ہوں، لیکن میرا پروجیکٹ جلد ہی ختم ہونے والا ہے اور میری ملازمت غیر محفوظ ہے۔ میں سرکاری ضابطے کے مطابق الیکٹریکل کام کا کنٹریکٹر ہوں یعنی میں کنٹریکٹ لینے کا مستحق ہوں،لیکن مسئلہ یہ ہے کہ مجھے سرکاری افسران کو رشوت دینی پڑے گی، کبھی ٹینڈر لینے کے لیے اور کبھی ہر بل کو پاس کرانے کے لیے (کنٹریکٹ پورا ہونے پر پیسے لینے کی غرض سے)۔ براہ کرم، بتائیں کہ کیا اس صورت حال میں اس کی اجازت ہے جب کہ رشوت دینا ضروری ہو نیز رشوت کے بغیر اپنا حق لینے کے لیے کوئی دوسرا راستہ نہ ہو (دونوں صورتوں میں)؟

    جواب نمبر: 69285

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 1087-1071/M=11/1437

    حدیث میں رشوت لینے والے اور رشوت دینے والے دونوں پر لعنت آئی ہے اس لیے مسلمان کو رشوت کے لین دین سے احتراز لازم ہے صورت مسئولہ میں آپ پہلے پوری کوشش کریں کہ رشوت دینے کی نوبت نہ آئے لیکن اگر صورت حال ایسی ہو کہ رشوت دیئے بغیر اپنا حق لینے کا کوئی راستہ نہ ہو اور رشوت دینا ناگزیر ہو تو ایسی صورت میں جائز حق کی وصولیابی کی غرض سے رشوت دینے کی گنجائش ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند