• معاملات >> سود و انشورنس

    سوال نمبر: 605328

    عنوان:

    انکم ٹیکس میں دی گئی رقم کی تلافی کا جائز طریقہ كیا ہے؟

    سوال:

    میں تقریباً پچھلے دس سالوں سے الگ الگ پرائیویٹ کمپنیوں میں کام کرتا آیا ہوں، ہر جگہ میری تنخواہ میں سے انکم ٹیکس کی رقم کاٹی جاتی تھی، اب تک کل تقریباً چار پانچ لاکھ روپئے تک میری انکم ٹیکس کی رقم کٹ چکی ہے ، میرا سوال یہ ہے کہ کیا میں وہ پوری انکم ٹیکس میں دی گئی رقم کو واپس حاصل کرنے کے لیے کسی سرکاری بنک یا پوسٹ آفس میں کوئی فکس ڈپوزٹ یا اور کوئی اسکیم سے سود کے طورپر حاصل ہونے والی رقم سے تلافی سمجھ کر اپنے ذاتی استعمال میں لا سکتا ہوں؟ براہ کرم، اس کی وضاحت فرمائیں۔

    جواب نمبر: 605328

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 1255-817/B=12/1442

     انکم ٹیکس کی رقم جو آپ کی تنخواہ میں سے کاٹی گئی ہے اس کو واپس حاصل کرنے کے لئے کسی سرکاری بینک میں یا پوسٹ آفس میں کوئی فکس ڈپازٹ یا اور کوئی اسکیم سے سود کے طور پر حاصل ہونے والی رقم سے تلافی سمجھ کر لینا اور اپنے استعمال میں لانا جائز نہیں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند