• معاملات >> سود و انشورنس

    سوال نمبر: 58080

    عنوان: سود وانشورنس کے پیسے کو بطور رشوت کسی جگہ دے سکتے ہیں؟ کیوں کہ ہندوستان میں بغیر گھوس کے کوئی کام نہیں ہوتا ہے تو کیا ایسی جگہ ہم سود کے پیسے دے رکتے ہیں؟

    سوال: سود وانشورنس کے پیسے کو بطور رشوت کسی جگہ دے سکتے ہیں؟ کیوں کہ ہندوستان میں بغیر گھوس کے کوئی کام نہیں ہوتا ہے تو کیا ایسی جگہ ہم سود کے پیسے دے رکتے ہیں؟

    جواب نمبر: 58080

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 375-372/B=5/1436-U اس کے اصل مستحق غرباء ومساکین اور لُٹے پٹے لوگ ہیں، ان کو بلانیت ثواب دیدیا جائے۔ رشوت میں دینا جائز نہیں، البتہ حکومت کی طرف سے کوئی سود آپ پر لاگو ہے تو اس میں دے سکتے ہیں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند