• معاملات >> سود و انشورنس

    سوال نمبر: 29962

    عنوان: میں بنگلور، ہندوستان میں ایک کمپنی میں کام کررہا ہوں۔ ماشاء اللہ ، مجھے اچھی تنخواہ مل رہی ہے، میری انکم ٹیکس کٹوٹی بہت زیادہ ہے ۔ میں نے درج ذیل انشورنس پالیسیاں لی ہے جس کی وجہ سے مجھے ٹیکس میں راحت مل رہی ہے، ان پالیسوں سے میرا ارادہ سود یا فائدہ حاصل کرنا نہیں ہے۔ پالیسیاں یہ ہیں؛ ایل آئی سی ، بجاج الینزلائف انشورنس، پی پی ایف (پبلک پرویڈینٹ فنڈ1968/ ، این ایس سی (نیشنل سیونگ سرٹیکفیٹ ) سرکاری۔ براہ کرم، مشورہ دیں کہ کیا ٹیکس سے راحت پانے کے لیے یہ تمام لائف انشورنس پالیسیاں لینا جائز ہے؟ 

    سوال: میں بنگلور، ہندوستان میں ایک کمپنی میں کام کررہا ہوں۔ ماشاء اللہ ، مجھے اچھی تنخواہ مل رہی ہے، میری انکم ٹیکس کٹوٹی بہت زیادہ ہے ۔ میں نے درج ذیل انشورنس پالیسیاں لی ہے جس کی وجہ سے مجھے ٹیکس میں راحت مل رہی ہے، ان پالیسوں سے میرا ارادہ سود یا فائدہ حاصل کرنا نہیں ہے۔ پالیسیاں یہ ہیں؛ ایل آئی سی ، بجاج الینزلائف انشورنس، پی پی ایف (پبلک پرویڈینٹ فنڈ1968/ ، این ایس سی (نیشنل سیونگ سرٹیکفیٹ ) سرکاری۔ براہ کرم، مشورہ دیں کہ کیا ٹیکس سے راحت پانے کے لیے یہ تمام لائف انشورنس پالیسیاں لینا جائز ہے؟ 

    جواب نمبر: 29962

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(ل):379=279-3/1432

    فی نفسہ لائف انشورنس کرانا جائز نہیں ہے، اس میں سود اور قمار دونوں پائے جاتے ہیں اور دونوں بنص قطعی حرام ہیں، البتہ اگر آپ کی انکم ٹیکس کٹوتی بہت زیادہ ہے اور آپ نے لائف انشورنس کی پالیسیاں صرف انکم ٹیکس سے بچنے کے لیے لی ہیں، تو ممکن ہے کہ آپ پر اس کا وبال نہ ہو، البتہ اضافی ملنے والی رقموں کو صدقہ کرنا واجب ہوگا۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند