• معاملات >> سود و انشورنس

    سوال نمبر: 25571

    عنوان: اسلام علیکم۔ مفتی صاحب میرے پاس پرائز بونڈ ہیں لیکن میں اسکو کیش نہیں کرواتا اور دو دفعہ میرا انعام بھی نکلا ہے ایک ہزار کا لیکن میں نے نہیں لیا میرے سے ایک آدمی نے کہا جب تم نے انعام نہیں لینا تو تم اسکو کیش کر والو کہنے لگا تم نے اسکو رکھا ہوا ہے یہ بھی گناہ ہے ہوسکتا تمہارا انعام زیادہ کا نکل آئے تو تم اسکو لے لو۔آپ بتایئں اگر میں انعام نہیں لیتا تو میرا رکھنا جائز نہیں ہے کیا۔۔برائے کرم حوالے سے رھنمائی کریں؟

    سوال: اسلام علیکم۔ مفتی صاحب میرے پاس پرائز بونڈ ہیں لیکن میں اسکو کیش نہیں کرواتا اور دو دفعہ میرا انعام بھی نکلا ہے ایک ہزار کا لیکن میں نے نہیں لیا میرے سے ایک آدمی نے کہا جب تم نے انعام نہیں لینا تو تم اسکو کیش کر والو کہنے لگا تم نے اسکو رکھا ہوا ہے یہ بھی گناہ ہے ہوسکتا تمہارا انعام زیادہ کا نکل آئے تو تم اسکو لے لو۔آپ بتایئں اگر میں انعام نہیں لیتا تو میرا رکھنا جائز نہیں ہے کیا۔۔برائے کرم حوالے سے رھنمائی کریں؟

    جواب نمبر: 25571

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(ھ): 2297=14488-10/1431

    پرائز بونڈ کے عنوان سے جو اسکیم رائج ہے وہ لاٹری وقمار پر مشتمل ہے پس اس میں حصہ لینا ناجائز وحرام ہے، خواہ انعام آپ لیں یا نہ لیں بہرصورت یہی حکم ہے، بعنوان ”پرائز بانڈ بیسی اور انعامی اسکیمیں“ ”آپ کے مسائل اور ان کا حل“ ج:۶ نامی کتاب میں تفصیل کے ساتھ موجود ہے، اس کو اطمینان سے ملاحظہ کریں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند