• معاملات >> سود و انشورنس

    سوال نمبر: 18725

    عنوان:

    بینک کی سودی رقم لون میں دینا

    سوال:

    مفتی صاحب سے عرض ہے کہ بینک سے لون لیا اس پر سود لگتا ہے اور بینک میں میرا پیسہ ہے اس کا سود ملتا ہے تو کیا بینک سے ملنے والے سود کو بینک میں سود کی جگہ پر دے سکتے ہیں یا نہیں؟ خلاصہ یہ کہ بینک کے سود کو بینک میں ہی واپس سود کی جگہ پر دے دیں ،اگر نہیں تو پھر اس کی صورت کیا ہوگی؟

    جواب نمبر: 18725

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(ب): 87=87-1/1431

     

    جی ہاں بینک سے ملی ہوئی سودی رقم، لون کے سود میں دے سکتے ہیں، حرام مال جہاں سے آیا وہیں واپس کردینا درست ہے۔ خود اپنے استعمال میں لانا درست نہیں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند