• معاملات >> وراثت ووصیت

    سوال نمبر: 604830

    عنوان:

    ایك بیوی‏، دو بیٹیوں ایك بھائی اور دو بہنوں كے درمیان تقسیم وراثت

    سوال:

    اگر کسی شخص کو صرف بیٹی ہو اور اس شخص کا انتقال گیا تو اس کے پراپرٹی میں کون کون حصے دار ہونگے اور کتنا ۔اگر مرحوم نے انتقال کے وقت دو بیٹی۔دو بہن۔ایک بی بی۔ایک بھائی چھوڑ کر گزرے ہیں۔

    جواب نمبر: 604830

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 1163-284T/H=10/1442

     اگر وفات پانے والے شخص مرحوم نے اپنی وفات کے وقت اپنے والدین دادا، دادی نانی میں سے کسی کو نہیں چھوڑا تھا تو مرحوم شخص کا کل مالِ متروکہ چھیانوے (96) حصوں پر تقسیم کرکے بارہ (12) حصے مرحوم کی بیوہ (بی بی) کو اور بتیس بتیس (32-32) حصے مرحوم کی دونوں بیٹیوں کو اور پانچ پانچ (5-5) حصے مرحوم کی دونوں بہنوں کو اور دس (10) حصے مرحوم کے بھائی کو ملیں گے۔

    کل حصے   =             96

    -------------------------

    بیوہ           =             12

    بیٹی           =             32

    بیٹی           =             32

    بھائی         =             10

    بہن          =             5

    بہن          =             5

    --------------------------------


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند