• معاملات >> وراثت ووصیت

    سوال نمبر: 603604

    عنوان:

    اگر تقسیم كی وصیت غیر شرعی ہو تو اس كا كیا حكم ہے؟

    سوال:

    کیا یہ جائز ہے کہ باپ نے مرنے سے پہلے وصیت کی ہے چار چھوٹے بیٹوں کو 75 لاکھ روپے کا گھر دے اور چار بڑے بیٹوں کو 50 لاکھ روپے کا گھر دے ان کے گھروں میں اپس میں ایک دوسرے کے ساتھ کوء حق نہیں تین بہنوں کا بھی نہیں،لیکن ایک پلاٹ ہے جو 20 لاکھ روپے کا ہے باپ نے کہا اس پلاٹ کو 8بھائی اور 3 بہنیں جس میں ایک لڑکی غیر شادی شدہ ہے صرف یہ 20 لاکھ پلاٹ آپس میں شریعت کے مطابق تقسیم کریں اور بھائیوں کے گھرو ں میں بہنوں کا کوئی حق نہیں کیا یہ شریعت میں جائز ہے ؟

    جواب نمبر: 603604

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:708-588/L=8/1442

     اگر والد صاحب غلط ترکہ کی تقسیم کی وصیت کرجائیں تو ورثاء پر ان کی وصیت کے مطابق تقسیم کرنا لازم نہ ہوگا ، آپ کے والد نے جس حساب سے جائیداد کی تقسیم کی وصیت کی ہے وہ شرعی تقسیم نہیں ہے ۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند