• معاملات >> وراثت ووصیت

    سوال نمبر: 600526

    عنوان: باپ نے اپنی زندگی میں مكان بیٹی كے نام كردیا تو كیا وہ وراثت میں بھی حصے دار ہوگی؟

    سوال:

    اگر باپ اپنی پروپرٹی میں سے اپنی زندگی میں بیٹی کو کوئی چیز جیسے مکان لکھ کر دے تو کیا وہ بیٹی باپ کے مرنے کے بعد باپ کی باقی پروپرٹی میں حصہ دار ہے یا نہیں؟ اگر ہے تو کتنا حصہ ہے اور جو باپ کی زندگی میں لیا اس کا کیا بنے گا؟

    جواب نمبر: 600526

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 178-111/B=02/1442

     اگر باپ نے اپنی جائیداد میں سے کوئی مکان اپنی بیٹی کے نام لکھ کر اسے ہبہ کردیا اور اسے قابض و مالک بنادیا اور خود باپ اس مکان سے دستبردار ہوگیا تو اس مکان کی مالک بیٹی ہوگی۔ زندگی میں جو کچھ بیٹی کو دیا ہے یہ ہبہ ہے اور باپ کے مرنے کے بعد باپ کی جس قدر جائیداد ہے اس میں میراث جاری ہوگی اور اس بیٹی کو بھی پورا حصہ ملے گا جس کو اپنا ایک مکان لکھ چکا ہے۔ پہلے تو ہبہ کے ذریعہ مکان ملا ہے اور اس کی مالک ہوئی اور اب مرنے کے بعد میراث کے طور پر بیٹی کو ملے گا، تو وہ دونوں کی مالک ہوگئی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند