• معاملات >> وراثت ووصیت

    سوال نمبر: 28817

    عنوان: میرے والد میونسپلٹی کے ملازم تھے، ہم میونسپل کوارٹر میں رہتے ہیں اور پچاس سالوں سے کرایہ دے رہے ہیں۔ ہم دوبھائی اور چار بہنیں ہیں۔ 1993/ میں میرے والد کا انتقال ہوگیا تھا۔ اب میونسپل اتھاریٹی نے ان مکانوں کو کرایہ داروں کے حوالے نیزا ملکیت دینے کے لئے کچھ رقم لینے کا فیصلہ کیا ہے۔ جب میرے والد حیات تھے تو انہوں نے 1980/میں دوسری شادی کی تھی۔ میری سوتیلی ماں دوسرے مکان میں رہیتی تھیں جو والد صاحب کی ملکیت میں تھا۔ 2004/ سوتیلی ماں کا بھی انتقال ہوگیاہے، پسماندگان میں تین بیٹے اور تین بیٹیاں ہیں۔ 
    سوال یہ ہے کہ اتنے برسوں سے میری والدہ کرایہ دے رہی تھیں اور اس کوارٹر (مکان)میں رہ رہی تھیں ۔ کیا والدہ میونسپلٹی کو یہ رقم دے سکتی ہیں اور گھر کو اپنی ملکیت میں لے سکتی ہیں؟ یا سوتیلے بھائی اور بہنیں بھی اس میں شریک ہوسکتی ہیں؟

    سوال: میرے والد میونسپلٹی کے ملازم تھے، ہم میونسپل کوارٹر میں رہتے ہیں اور پچاس سالوں سے کرایہ دے رہے ہیں۔ ہم دوبھائی اور چار بہنیں ہیں۔ 1993/ میں میرے والد کا انتقال ہوگیا تھا۔ اب میونسپل اتھاریٹی نے ان مکانوں کو کرایہ داروں کے حوالے نیزا ملکیت دینے کے لئے کچھ رقم لینے کا فیصلہ کیا ہے۔ جب میرے والد حیات تھے تو انہوں نے 1980/میں دوسری شادی کی تھی۔ میری سوتیلی ماں دوسرے مکان میں رہیتی تھیں جو والد صاحب کی ملکیت میں تھا۔ 2004/ سوتیلی ماں کا بھی انتقال ہوگیاہے، پسماندگان میں تین بیٹے اور تین بیٹیاں سوال یہ ہے کہ اتنے برسوں سے میری والدہ کرایہ دے رہی تھیں اور اس کوارٹر (مکان)میں رہ رہی تھیں ۔ کیا والدہ میونسپلٹی کو یہ رقم دے سکتی ہیں اور گھر کو اپنی ملکیت میں لے سکتی ہیں؟ یا سوتیلے بھائی اور بہنیں بھی اس میں شریک ہوسکتی ہیں؟

    ہیں۔ 

    جواب نمبر: 28817

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(د): 244=142-2/1432

    سوال میں مذکور بیان کے مطابق چوں کہ یہ مکان (جس میں آپ کی والدہ اس وقت رہ رہی ہیں) آپ کے والد صاحب کی ملکیت میں نہیں تھا؛ بل کہ وہ کرایہ دار کی حیثیت سے اس میں رہتے تھے، ان کی وفات کے بعد سے آپ کی والدہ اس میں اب تک رہ رہی ہیں اور اس پر قابض ہیں؛ اس لیے اگر میونسپلٹی اتھاریٹی، قیمت لے کر مکان کو موجودہ کرایہ داروں (یعنی جو لوگ اس وقت قابض ہیں) ان کی ملکیت میں دینا چاہتی ہے تو یہ ایک عقد بیع کا معاملہ ہے؛ لہٰذا اگر آپ کی والدہ اپنی طرف سے مطلوبہ رقم ادا کردیتی ہیں اور میونسپل اتھاریٹی مکان ان کی ملکیت کردیتی ہے تو آپ کی ماں اس مکان کی مالک ہوجائیں گی اور چوں کہ یہ مکان آپ کے والد کا ترکہ نہیں؛ اس لیے آپ کے سوتیلے بھائی بہنوں کا اس میں حصہ نہیں ہوگا۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند