• معاملات >> وراثت ووصیت

    سوال نمبر: 25360

    عنوان: تقریبا دوسال پہلے زید کی فاطمہ سے شادی ہوئی تھی ، جس کے نتیجہ میں خالد پیداہوا ، لیکن پیدائش کے وقت فاطمہ کا انتقال ہوگیا اور خالد حیات ہے ، اب فاطمہ کے اہل خانہ زید سے جہیز کے سامان کا مطالبہ کرتے ہیں، سوال یہ ہے کہ جہیز کے سامان واپس کیئے جائیں گی یا وراثت میں مال بن کر تقسیم ہوں گے ؟ تقسیم میں کیا صورت ہوگی؟ فاطمہ کے رشتہ داروں میں شوہر اور بیٹے کے علاوہ میکے والوں میں اس کے والدین ، دوبہنیں اور دوبھائیں ہیں۔ براہ کرم، جواب دیں۔ 

    سوال: تقریبا دوسال پہلے زید کی فاطمہ سے شادی ہوئی تھی ، جس کے نتیجہ میں خالد پیداہوا ، لیکن پیدائش کے وقت فاطمہ کا انتقال ہوگیا اور خالد حیات ہے ، اب فاطمہ کے اہل خانہ زید سے جہیز کے سامان کا مطالبہ کرتے ہیں، سوال یہ ہے کہ جہیز کے سامان واپس کیئے جائیں گی یا وراثت میں مال بن کر تقسیم ہوں گے ؟ تقسیم میں کیا صورت ہوگی؟ فاطمہ کے رشتہ داروں میں شوہر اور بیٹے کے علاوہ میکے والوں میں اس کے والدین ، دوبہنیں اور دوبھائیں ہیں۔ براہ کرم، جواب دیں۔ 

    جواب نمبر: 25360

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(ل): 1470=431-10/1431

    صورت مسئولہ میں فاطمہ کو دیا گیا سامان جہیز فاطمہ کی وفات پر مرحومہ کا ترکہ ہوگیا جسے اس کے ورثاء شرعی کے درمیان تقسیم کیا جائے گا، اگر مرحومہ کے مذکورہ بالا افراد ہی وارث شرعی ہیں تو مرحومہ کا تمام ترکہ بعد ادائے حقوق مقدمہ علی المیراث 12حصوں میں منقسم ہوکر 3 حصے شوہر کو، 2،2 حصے والد اور والدہ کو، اور 5 حصے لڑکے کو ملیں گے مرحومہ کے بھائی اور بہن مرحومہ کے ترکہ سے محروم ہوں گے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند