• متفرقات >> حلال و حرام

    سوال نمبر: 68532

    عنوان: جسم کی موٹائی کم کرنے کے لیے مساج تھراپی کرانا؟

    سوال: میں یہ پوچھنا چاہتاہوں کہ میری بیٹی کی عمر پندر سال ہے اور اس کا جسم بھاری(لحیم شحیم) ہے، اس لیے میں اس کے جسم کی موٹائی کم کرنے کے لیے اس کو ای ایل سی سی صحت سینٹر میں بھیجنا چاہتاہوں۔ اس سینٹر میں جانے کے بعد معلوم ہوا کہ کچھ پرہیز کرنا ہوگا اور پورے جسم کا مساج تھیرپی (therapy)ہوگا یعنی مالش کے ذریعہ علاج کیا جائے گا۔ سوال یہ ہے کہ اس کو مساج تھرپی کے لیے بھیجوں؟ میرے خیال میں کپڑے اتار کر مساج تھرپی کیا جائے گا تو کیا شریعت کی روشنی میں ایسا کرنادرست ہے؟

    جواب نمبر: 68532

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 1032-985/B=12/1437

    اگر مساج تھیرپی کرنے والی عورت ہے اور پردے میں کرے تو برائے علاج وہاں بھیجنے میں کوئی حرج نہیں، لیکن اگر یہ کام مرد کرتے ہیں تو پھر جائز نہیں۔ کسی اچھے یونانی ماہر طبیب سے علاج کرائیں وہ دواوٴں کے ذریعہ اس کا علاج کردیں گے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند