• متفرقات >> حلال و حرام

    سوال نمبر: 608155

    عنوان:

    قرض کے بدلے مکان دینا

    سوال:

    ایک مسئلہ عرض ہے کہ :- ایک علاقہ طریقہ رائج ہے کہ جب زید کو پیسوں کی ضرورت پڑتی ہے تو وہ اپنا مکان عمرو کو ایک متعینہ مدت تک کے لئے دے دیتا ہے اور عمرو سے ایک متعینہ رقم لے لیتا ہے اور جب زید کے پاس رقم کا انتظام ہو جاتا ہے تو وہ مدت کے اختتام پر رقم واپس دے دیتا ہے اور مکان لے لیتا ہے تو کیا یہ شکل اور طریقہ درست ہے ؟ اور اگر رقم کے حصول کو مدت متعین کرے کہ جب میرے پاس رقم آئے گی تب تک کے لئے مکان لے لے تو اس صورت میں کیا حکم ہوگا ؟

    جواب نمبر: 608155

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:248-124/D=5/1443

     صورت مسئولہ میں اگر قرض دینے کے بدلے مکان سے انتفاع مشروط یا معروف ہوتویہ بیع وفاء کی شکل ہے ، جو حقیقت میں سودی شکل ہونے کی وجہ سے ناجائز ہے ۔( ضمیمہ باقیات فتاوی رشیدیہ ، ص: ۵۹۶، سوال: ۹۹۰، ط: مفتی الہی بخش اکیڈمی، کاندھلہ ، امداد الفتاوی : ۱۰۷/۳، ۱۰۸، کتاب البیوع، زکریا، دیوبند، قدیم )


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند