• متفرقات >> حلال و حرام

    سوال نمبر: 605224

    عنوان: کیا ایک طرفہ شرط بازی لگانا جائز ہے ؟

    سوال:

    ایک شخص نے کہا تھا فلاں شخص سی آر پی ہے اور دوسری شخص نے کہا تھا کہ فلاں سی آر پی نہیں ہے لیکن دوسری کہا تھا شرط بازی لگاؤ سو روپے کی کیونکہ ایک طرفہ شرط بازی لگانا جائز ہے کیا اس صورت حال میں شرط بازی لگانا جائز ہے یا نہیں؟دلیل کے ساتھ وضاحت فرمائیں تو عین وکرم ہوگا۔

    جواب نمبر: 605224

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:817-639/N=12/1442

     کسی بھی جائز ہار جیت میں یک طرفہ انعام کی شرط جائز ہے، دو طرفہ جائز نہیں اور صورت مسئولہ میں یک طرفہ انعام کی صورت یہ ہے کہ دونوں میں سے کوئی ایک، دوسرے سے کہے کہ اگرتحقیق ومعلومات میں تمہاری بات صحیح نکلی کہ فلاں شخص سی آر پی ہے یا سی آر پی نہیں ہے تو میں آپ کو ۱۰۰/ روپے دوں گا اور اگر تمہاری کی بات صحیح نہیں نکلی تو کچھ نہیں، یعنی: نہ میں آپ کو کچھ دوں گا اور نہ آپ کو مجھے کچھ دینے کی ضرورت؛ البتہ عبث اور لا یعنی چیزوں میں یک طرفہ انعام کی شرط سے بھی بچنا چاہیے، صرف مفید اور جائز کاموں میں اس طرح کی شرط لگانی چاہیے کذا في کتب الفقہ والفتاوی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند