• متفرقات >> حلال و حرام

    سوال نمبر: 604418

    عنوان:

    چالیس ہزار كی موٹر سائیل قسطوں پر ساٹھ ہزار میں بیچنا؟

    سوال:

    بندہ قسطوں کا کاروبار کرتا ہے ہر قسم ایکٹرانکس سامان موٹرسائکل موبائل وغیرہ قسطوں پر دیتاہے، مثلاً ایک موٹرسائکل ہے اس کی نقد قمیت 40000 روپے ہے بندہ یہ 40000 والا موٹرسائکل 12 مہینے کیلئے 60000 روپے پر دیتا ہے اس میں 10000 بطور ایڈوانس لیتا ہے اور باقی رقم 4000 روپے ہر مہینہ قسط لیتا ہے کیا یہ جائز ہے یہ نا جائز؟

    جواب نمبر: 604418

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 745-619/M=10/1442

     قسطوں پر سامان بیچنا جائز ہے بشرطیکہ سودی معاملہ نہ ہو، چالیس ہزار قیمت والی موٹر سائیکل، قسطوں پر ساٹھ ہزار میں بیچتے ہیں اور پوری قیمت مجلس عقد میں طے ہوجاتی ہے اور دس ہزار اُسی وقت لے لیتے ہیں اور بقیہ پچاس ہزار کو ہر ماہ ایک متعینہ رقم قسطوار کے طور پر وصول کرتے رہتے ہیں اور تاخیر کی وجہ سے متعینہ قیمت سے زائد رقم کی وصولی نہیں ہوتی اور نہ اضافے کا مشروط معاملہ ہوتا ہے تو اس طریقے پر بیع و شراء جائز ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند