• متفرقات >> حلال و حرام

    سوال نمبر: 60293

    عنوان: مسجد میں سی سی كیمرہ

    سوال: ہمارے محلہ کی مسجد انار والی مسجد لکچھمی نگر میں اندر اور باہر کی جانب بہت سے سی سی ٹی وی کیمروں کا مسجد کی انتظامیہ کمیٹی کی جانب سے نصب کرا یا گیاہے اور اس کی وجہ یہ بیان کی گئی ہے کہ یہاں جوتے چپل کی چوری ہوتی ہے ، ان کیمروں کا مانیٹر (ٹی وی) مسجد کے اندر حجرے میں رکھا ہوا ہے جس میں ہر وقت مسجد میں چلتے پھرتے لوگوں کی تصویر نظر آرہی ہے جس کی ریکارڈنگ بھی ہورہی ہے اور مسجد میں جو جماعت سے نماز ہور ہی ہے اور جو لوگ عبادت کرتے ہیں ان سب کی بھی ویڈیو بن رہی ہے اور دلیل یہ پیش کی جارہی ہے کہ خانہ کعبہ اور مدینہ منورہ میں بھی کیمرے لگے ہوئے ہیں اور اکثر لوگ کیمرے کے لگانے پر اعتراض کررہے ہیں۔ اس صورت میں ہماری مسجد میں کیمروں کا لگانا جائز ہے یا ناجائز ہے؟

    جواب نمبر: 60293

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 897-902/H=10/1436-U جوتے چپل کی چوری کے خدشہ کی وجہ سے سی سی ٹی وی کیمروں کا مسجد میں لگانا جائز نہیں، جو حضرات اعتراض کررہے ہیں ان کا قول درست ہے، خانہٴ کعبہ اور مدینہ منورہ میں لگائے جانے کی وجوہات ہمارے علم میں نہیں ہیں اور وہاں یعنی مسجد حرام اور مسجد نبوی میں لگایا جانا دلیلِ جواز بھی نہیں ہے، بہت ممکن ہے کہ کوئی ضرورتِ شدیدہ وہاں درپیش ہو، بہرحال وہاں لگائے جانے پر قیاس کرکے یہاں (دہلی وغیرہ میں) لگوانا جائز نہیں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند