• متفرقات >> حلال و حرام

    سوال نمبر: 49617

    عنوان: آتے میں نمك كے برابر كمانے كا مطلب كیا ہے؟

    سوال: میں غازی آباد میں رہتا ہوں۔ میں موبائل ریپرنگ کا کام کرتا ہوں۔ قریباً آٹھ سال سے۔ یہ جو کام ہے اس میں بہت بار ایسا ہوتاہے کہ ہمارے پاس کچھ موبائل ایسے آتے ہیں جس میں ہمارا سامان کچھ نہیں لگتا یا لگتا ہے بھی تو اتنے کا نہیں ہوتا جتنے ہم اپنے گراہک سے مانگتے ہیں۔ میرے کہنے کا مطلب ہوا کہ میں نے یہ سنا ہے کہ آٹے میں نمک کے برابر کمانا چاہیے۔ مگر یہاں تو کچھ زیادہ ہی مل جاتا ہے لاگت کے حساب سے۔ ایک بات یہ بھی ہے کہ اگر میں اس حساب سے پیسہ لیتا ہوں پورے دن میں کچھ نہیں کما سکتا اور جو لوگ موبائل کا کام کررہے ہیں ان سب کی روزی پر فرق پڑیگا۔ مجھے کیا کرنا چاہیے؟

    جواب نمبر: 49617

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 137-116/H=2/1435-U آٹے میں نمک کے برابر کمانا چاہیے“ سے بھی یہی مراد ہے کہ عرفا جتنا نفع اور کمائی مناسب سمجھی جائے اس کو اختیار کرے اور جو مقدار خلافِ مروت ہو اس کو اختیار نہ کرے، ایسا کرنے پر ان شاء اللہ کسی کی روزی پر فرق نہ پڑے گا۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند