• متفرقات >> حلال و حرام

    سوال نمبر: 43978

    عنوان: ہوم لون

    سوال: میں اپنے اہل وعیال کے ساتھ اپنے ذاتی مکان میں رہتا ہوں جس کا کچھ حصہ انتہائی مخدوش ہے اور کسی بھی وقت کوئی حادثہ پیش آسکتا ہے، اس کی تعمیر فی الفور ناگزیر ہے، جبکہ میری مالی حالت ایسی نہیں کہ میں اتنی بڑی رقم کا انتظام کرسکوں اور تعمیر کراسکوں میرے لئے صرف ایک ہی راستہ ہے کہ میں بینک سے قرض لے کر تعمیری کام شروع کردوں اور حادثہ سے محفوظ ہو سکوں، موجودہ حالت میں کیا بینک سے قرض (ہوم لون) لینا میرے لئے درست ہے یا نہیں براہ کرم مفصل جواب مرحمت فرمائیں۔نوازش ہوگی

    جواب نمبر: 43978

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 265-250/N=3/1434 اگر آپ کرایہ کا کوئی مکان لے سکتے ہوں تو مملوکہ ذاتی مکان کی اصلاح ومرمت ہوجانے تک عارضی طور پر کچھ سالوں کو لیے کرایہ کا مکان لے کر اس میں منتقل ہوجائیں او رآمدنی سے تھوڑا تھوڑا بچاکر اس عرصہ میں ذاتی مکان کی اصلاح ومرمت کرالیں، اور اگرآمدنی اتنی کم ہے کہ مکان کے کرایہ کے ساتھ گذر وبسر انتہائی مشکل ودشوار ہو اور کہیں سے قرضہٴ حسنہ ملنے کی بھی امید نہ ہو اور آپ کے پاس ضرورت سے زائد کوئی ایسی چیز بھی نہ ہوجسے فروخت کرکے مکان کی ضروری اصلاح ومرمت کراسکیں تو آپ ایسی سخت مجبوری میں مکان کی بقدر ضرورت اصلاح ومرمت کے لیے بینک سے لون لے سکتے ہیں، اس صورت میں سودی قرض لینے کی شرعاً گنجائش ہوگی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند