• متفرقات >> حلال و حرام

    سوال نمبر: 364

    عنوان:

    میں درج ذیل سوالات کے جواب چاہتا ہوں: (۱) کیا میاں بیوی بطور تلذذ ایک دوسرے کی مشت زنی کرسکتے ہیں؟ (۲) کیا میاں بیوی ایک دوسرے کے مخصوص اعضاء کی مس و تقبیل کرسکتے ہیں، اگر ان کو اس میں حظ حاصل ہوتا ہو؟ (۳) کیا بیوی اگر حالت حیض میں ہو، تو اپنے شوہر کی مشت زنی کرسکتی ہے؟

    سوال:

    میں درج ذیل سوالات کے جواب چاہتا ہوں:

    1. کیا میاں بیوی بطور تلذذ ایک دوسرے کی مشت زنی کرسکتے ہیں؟
    2. کیا میاں بیوی ایک دوسرے کے مخصوص اعضاء کی مس و تقبیل کرسکتے ہیں، اگر ان کو اس میں حظ حاصل ہوتا ہو؟
    3. کیا بیوی اگر حالت حیض میں ہو، تو اپنے شوہر کی مشت زنی کرسکتی ہے؟

    جواب نمبر: 364

    بسم الله الرحمن الرحيم

    (فتوى: 166/ل=163/ل)

     

    1. بضرورت تسکین بلاکراہت جائز ہے، بلاضرورت مکروہ تنزیہی ہے: ویجوز أن یستمنی بید زوجتہ وخادمتہ الخ وسیذکر الشارح في الحدود أنہ یکرہ ولعل المراد بہ کراہة التنزیہ (شامي:3/371، زکریا دیوبند)
    2. میاں بیوی کا ایک دوسرے کی شرم گاہ کو چھونا جائز ہے البتہ شرم گاہ کا بوسہ لینا مکروہ و ناجائز ہے: قال في الہندیة: في النوازل إذا أدخل الرجل ذکرہ في امرأتہ قد قیل یکرہ وقد قیل بخلافہ کذا في الذخیرة (عالمگیري: 5/372)
    3. اس حالت میں بھی کرسکتی ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند