• متفرقات >> حلال و حرام

    سوال نمبر: 35478

    عنوان: پہاڑ كی خود رو گھاس

    سوال: اگر کسی آدمی کی ملکیت میں پہاڑ ہے اور اس نے بہت حفاظت کی ہے، اب اس میں قدرتی خشک گھاس اگتی ہیں تو کیا اس میں عشر دینا ہوگا کہ نہیں؟ اور اگر کوئی اس پہاڑ سے بلااجازت خشک گھاس وغیرہ لے جاتا ہے تو کیا جس کی ملکیت ہے وہ کسی کو منع کرسکتا ہے؟

    جواب نمبر: 35478

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(ب): 1927=1609-12/1432 پہاڑ خودرَو قدرتی ہوتا ہے اس کا کوئی مالک نہیں ہوتا ہے۔ اگر وہ کسی حکومت کی ملکیت میں آگیا ہے ارو اس سے کسی شخص نے خریدا ہے تو البتہ وہ مالک ہوجائے گا۔ ایسی صورت میں اس پر اُگی ہوئی خودرَو گھاس اس کی ملک نہیں ہے جو کوئی اس گھاس کو کاٹ لے وہ مالک ہوجائے گا، مالک پہاڑ اسے منع نہیں کرسکتا۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند