• متفرقات >> حلال و حرام

    سوال نمبر: 20383

    عنوان:

    ہم سرکار کو مال سپلائی کرتے ہیں اور آرڈر حاصل کرنے کے لیے ہمیں رشوت دینا پڑتا ہے ۔ اس وقت ہمارے پاس کوئی دوسرا کاروبار یا آمدنی کا ذریعہ نہیں ہے۔ ہم کیا کریں؟

    سوال:

    ہم سرکار کو مال سپلائی کرتے ہیں اور آرڈر حاصل کرنے کے لیے ہمیں رشوت دینا پڑتا ہے ۔ اس وقت ہمارے پاس کوئی دوسرا کاروبار یا آمدنی کا ذریعہ نہیں ہے۔ ہم کیا کریں؟

    جواب نمبر: 20383

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(د): 448=334/4/1431

     

    رشوت دینا اور لینا دونوں حرام ہے، البتہ دینے کی ایسے ضرورت کے موقعہ پر گنجایش ہے، جہاں اپنا کوئی حق واجب فوت ہورہا ہے یا مباح اور جائز کام میں ناقابل برداشت رکاوٹ پیدا ہورہی ہو نیز متبادل بے غبار کوئی دوسری صورت آمدنی کی نہ ہو۔ پس صورت مسئولہ میں جب دوسرا کاروبار نہیں ہے تو آرڈر حاصل کرنے کے لیے رشوت دینے کی گنجائش ہے بشرطیکہ رشوت دے کر اور کوئی ناجائز فائدہ آپ حاصل نہ کریں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند