• متفرقات >> حلال و حرام

    سوال نمبر: 20033

    عنوان:

    ہمارا سوال یہ ہے کہ ہم نے پاسپورٹ کے لیے درخواست کی ہے لیکن ہمارا ایڈریس کا ثبوت جو ہے وہ کرائے کے مکان کا ہے لیکن اب ہم وہاں نہیں رہتے دوسرے مکان میں رہتے ہیں۔ اور جب پولیس انکوائری کے لیے گئی تو وہاں پر ہم کو کسی وجہ سے کرایہ کے مکان کو خود کا مکان کہنا پڑا جو ہمارے لیے جھوٹ ثابت ہوگیا۔ جس کی وجہ سے ہم کو بہت پچھتاوا ہوا۔ یہ ہم سے گناہ ہوگیا۔ کیا جو پاسپورٹ آئے گا وہ ہم استعمال کرسکتے ہیں یا پھر کوئی معافی کی صورت ہو تو ہمیں بتائیں؟

    سوال:

    ہمارا سوال یہ ہے کہ ہم نے پاسپورٹ کے لیے درخواست کی ہے لیکن ہمارا ایڈریس کا ثبوت جو ہے وہ کرائے کے مکان کا ہے لیکن اب ہم وہاں نہیں رہتے دوسرے مکان میں رہتے ہیں۔ اور جب پولیس انکوائری کے لیے گئی تو وہاں پر ہم کو کسی وجہ سے کرایہ کے مکان کو خود کا مکان کہنا پڑا جو ہمارے لیے جھوٹ ثابت ہوگیا۔ جس کی وجہ سے ہم کو بہت پچھتاوا ہوا۔ یہ ہم سے گناہ ہوگیا۔ کیا جو پاسپورٹ آئے گا وہ ہم استعمال کرسکتے ہیں یا پھر کوئی معافی کی صورت ہو تو ہمیں بتائیں؟

    جواب نمبر: 20033

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(د): 378=101-3/1431

     

    پاسپورٹ آنے پر اسکے استعمال کرنے میں حرج نہیں، البتہ جھوٹ بولنا گناہ کبیرہ ہے، اس کاارتکاب ہوا جس کے لیے توبہ استغفار کریں۔ اور غلط بیان دینے کی وجہ سے کچھ غلط اندراج ہوگیا ہو جو قانوناً قابل مواخذہ ہو تو اس کی صفائی متعلقہ محکمہ کے ذمہ داروں سے مل کر کریں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند