• متفرقات >> حلال و حرام

    سوال نمبر: 18389

    عنوان:

    قوالی کے بارے میں پہلے بھی سوال کیا تھا کہ قوالی مطلقاً جائز ہے یا اس کی کوئی شرط ہے؟ابھی تک اس کا کوئی جواب نہیں آیا۔ برائے کرم جواب عنایت فرماویں۔

    سوال:

    قوالی کے بارے میں پہلے بھی سوال کیا تھا کہ قوالی مطلقاً جائز ہے یا اس کی کوئی شرط ہے؟ابھی تک اس کا کوئی جواب نہیں آیا۔ برائے کرم جواب عنایت فرماویں۔

    جواب نمبر: 18389

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(ل): 47=50-1/1431

     

    قوالی میں بالعموم باجے سارنگی وغیرہ کا استعمال ہوتا ہے جو شرعاً ناجائز ہے نیز قوال اکثر ایسے اشعار پڑھتا ہے جس سے طبیعت میں ہیجانی کیفیت پیدا ہوتی ہے او راگر قوالی میں مقابلہ ہورہا ہو جس میں مرد اور عورت دونوں شریک ہوتے ہوں تو اس میں عورت کی آواز سننے کے ساتھ ساتھ بدنگاہی و دوسرے محظورات شرعیہ کا بھی ارتکاب کرنا پڑتا ہے اس لیے موجودہ دور کی قوالی سننا یا اس میں شرکت کرنا جائز نہیں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند