• متفرقات >> حلال و حرام

    سوال نمبر: 1718

    عنوان: میں اپنی دکان میں الیکٹرونک اشیا ء فروخت کرتاہوں جیسے سی ڈی، ڈی وی ڈی پلیئر، ہوم تھیٹر ( ساونڈ بکس) ایملیفائر (آلہ مکبر الصوت) اور دوسرے الیکٹرونک آئٹم ۔ گانوں اور فلمی سی ڈی نہیں بیچتا ہوں۔ سوال یہ ہے کہ کیا میرا کاروبار حلال ہے؟ میرے آمدنی حلال ہے؟ میں اپنی کمائی سے مسجد ، مدرسے اور دوسرے خیر کے کاموں میں حصہ لے سکتا ہوں ؟ اس آمدنی سے حج کروں تو مقبول ہوگا؟ بعض لوگوں کا ماننا ہے کہ یہ کاروباروحرام اور اس کی آمدنی حرام ہے۔ براہ کرم، جواب مرحمت فرمائیں۔

    سوال: میں اپنی دکان میں الیکٹرونک اشیا ء فروخت کرتاہوں جیسے سی ڈی، ڈی وی ڈی پلیئر، ہوم تھیٹر ( ساونڈ بکس) ایملیفائر (آلہ مکبر الصوت) اور دوسرے الیکٹرونک آئٹم ۔ گانوں اور فلمی سی ڈی نہیں بیچتا ہوں۔ سوال یہ ہے کہ کیا میرا کاروبار حلال ہے؟ میرے آمدنی حلال ہے؟ میں اپنی کمائی سے مسجد ، مدرسے اور دوسرے خیر کے کاموں میں حصہ لے سکتا ہوں ؟ اس آمدنی سے حج کروں تو مقبول ہوگا؟ بعض لوگوں کا ماننا ہے کہ یہ کاروباروحرام اور اس کی آمدنی حرام ہے۔ براہ کرم، جواب مرحمت فرمائیں۔

    جواب نمبر: 1718

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 581/ د= 578/ د

     

    مذکورہ الیکٹرونک اشیاء کا استعمال جائز کاموں کے لیے بھی ہوتا ہے، اس لیے ان اشیاء کا فروخت کرنا جائز ہے جب کہ آپ فلمی سی، ڈی اور گانوں کو نہیں بیچتے تو آپ کی آمدنی حلال ہوئی۔ مسجد، مدرسہ اور دوسرے کارِ خیر میں خرچ کرسکتے ہیں، حج بھی ان شاء اللہ مقبول ہوگا۔ ان اشیاء کو خرید کر جو شخص اس ناجائز طور پر استعمال کرے گا وہ گنہ گار ہوگا، لیکن ان چیزوں کا استعمال صرف گناہ کے کاموں میں نہیں ہوتا بلکہ جائز کاموں میں بھی ہوتا ہے اس لیے بیچنا ان کا جائز ہے، آمدنی حلال ہے۔ جو لوگ حرام کہتے ہیں وہ کس وجہ سے؟


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند