• متفرقات >> حلال و حرام

    سوال نمبر: 12069

    عنوان:

    اسلام میں گورنمنٹ کا ٹیکس لینا حرام ہے۔ علماء نے گورنمنٹ کے لیے مجبوری میں بعض شرطوں کے ساتھ اتنا ٹیکس عوام پر عائد کرنے کی اجازت دی ہے جو کہ عوام کے لیے بوجھ نہ ہو۔ میں پاکستان میں رہتا ہوں یہاں پر سبھی ٹیکس کی شرح کافی زیادہ ہیں بلکہ بعض کی تو بہت زیادہ ہیں۔ اوران بھاری ٹیکس کا سارا بوجھ غریب عوام پر پڑتا ہے۔ یہ ظالمانہ ٹیکس شریعت میں تو حکومت کے لیے عائد کرنا حرام ہے۔ (۱)سوال یہ ہے کہ آیا گورنمنٹ کے ان ٹیکس اداروں مثلاً انکم ٹیکس، سیلس ٹیکس، پراپرٹی ٹیکس، ایکسائز ڈیوٹی وغیرہ میں نوکری کرنے کا شریعت میں کیا حکم ہے آیا ایسے اداروں میں نوکری کرنا حرام ہے یا جائز؟(۲)ہر قسم کی نوکری کرنا حرام ہے یا باغ کے مالی کی نوکری ، چپراسی کی نوکری، باورچی کی نوکری، دربان وغیرہ کی نوکری ،ایسے ملازم جو کہ براہ راست ٹیکس وصول کرنے کے کام میں شریک نہیں ہوتے ان کی نوکری کرنا حرام ہے؟ اور آیا ان کو ملنے والی تنخواہ حلال ہے یا حرام؟ (۳)او رجو لوگ براہ راست ٹیکس وصول کرنے او رٹیکس کی وصولی سے متعلق کام کرنے مثلاً ٹیکس کا حساب رکھنے، کہ کس سے کتنا ٹیکس لینا ہے وغیرہ کا کام کرتے ہیں ان کی نوکری حرام ہے؟ اور کیا ان کو ملنے والی تنخواہ حرام ہے؟

    سوال:

    اسلام میں گورنمنٹ کا ٹیکس لینا حرام ہے۔ علماء نے گورنمنٹ کے لیے مجبوری میں بعض شرطوں کے ساتھ اتنا ٹیکس عوام پر عائد کرنے کی اجازت دی ہے جو کہ عوام کے لیے بوجھ نہ ہو۔ میں پاکستان میں رہتا ہوں یہاں پر سبھی ٹیکس کی شرح کافی زیادہ ہیں بلکہ بعض کی تو بہت زیادہ ہیں۔ اوران بھاری ٹیکس کا سارا بوجھ غریب عوام پر پڑتا ہے۔ یہ ظالمانہ ٹیکس شریعت میں تو حکومت کے لیے عائد کرنا حرام ہے۔ (۱)سوال یہ ہے کہ آیا گورنمنٹ کے ان ٹیکس اداروں مثلاً انکم ٹیکس، سیلس ٹیکس، پراپرٹی ٹیکس، ایکسائز ڈیوٹی وغیرہ میں نوکری کرنے کا شریعت میں کیا حکم ہے آیا ایسے اداروں میں نوکری کرنا حرام ہے یا جائز؟(۲)ہر قسم کی نوکری کرنا حرام ہے یا باغ کے مالی کی نوکری ، چپراسی کی نوکری، باورچی کی نوکری، دربان وغیرہ کی نوکری ،ایسے ملازم جو کہ براہ راست ٹیکس وصول کرنے کے کام میں شریک نہیں ہوتے ان کی نوکری کرنا حرام ہے؟ اور آیا ان کو ملنے والی تنخواہ حلال ہے یا حرام؟ (۳)او رجو لوگ براہ راست ٹیکس وصول کرنے او رٹیکس کی وصولی سے متعلق کام کرنے مثلاً ٹیکس کا حساب رکھنے، کہ کس سے کتنا ٹیکس لینا ہے وغیرہ کا کام کرتے ہیں ان کی نوکری حرام ہے؟ اور کیا ان کو ملنے والی تنخواہ حرام ہے؟

    جواب نمبر: 12069

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 816=758/ب

     

    اگر سرکار ظالمانہ ٹیکس عائد کرتی ہے تو وہ اس کی ضامن ہوگی۔ مگر آپ اس میں نوکری کرنا چاہتے ہیں تو شرعی طور پر اس میں کام کرسکتے ہیں اور آپ کی اجرت حلال ہوگی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند