• عبادات >> حج وعمرہ

    سوال نمبر: 49155

    عنوان: کیا عورتوں کے لیے بھی مخصوص احرام کا کپڑا ضروری ہے ؟ جیسا کہ آج کا رواج ہے ، کیا ان کا حج کے ایام میں چہرہ کھلا رکھنا جائز ہے؟

    سوال: کیا عورتوں کے لیے بھی مخصوص احرام کا کپڑا ضروری ہے ؟ جیسا کہ آج کا رواج ہے ، کیا ان کا حج کے ایام میں چہرہ کھلا رکھنا جائز ہے؟

    جواب نمبر: 49155

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 1480-1480/M=1/1435-U عورتوں کے لیے حالت احرام میں کسی مخصوص کپڑے کی پابندی نہیں، وہ احرام میں سلے ہوئے کپڑے پہن سکتی ہیں، اسی طرح موزے اور دستانے وغیرہ پہن سکتی ہیں، البتہ حالت احرام میں عورت کے لیے چہرہ ڈھانپنا منع ہے، لیکن اجانب سے پردہ بھی ضروری ہے، اور سر کے بالوں کا ڈھکنا بھی ضروری ہے، اس لیے بہتر یہ ہے کہ عورت سرپر ہیٹ رکھ کر اوپر سے نقاب ڈال لے تاکہ اجنبی مردوں سے پردہ بھی ہوجائے اور ہیٹ کی وجہ سے نقاب کا کپڑا چہرہ کو نہ لگ پائے اورایک رومال سے سر کے بالوں کو اچھی طرح ڈھک لینا بھی مستحب ہے تاکہ بال ٹوٹنے نہ پائے اور ادھر ادھرمنتشر نہ ہونے پائے، آج کل رواج ہے کہ عورتیں حالت احرام میں اجنبی لوگوں سے چہرے کے پردہ کو ضروری نہیں سمجھتی ہیں، یہ غلط ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند