• عبادات >> حج وعمرہ

    سوال نمبر: 40855

    عنوان: میرا جو بیٹا ہے وہ صرف ۱۸ مہینے کا ہے ، کیا اس کو بھی احرام پہنانا پڑیگا ؟ یا پھر وہ اپنے گھر کے لباس میں رہ سکتا ہے ؟

    سوال: میں اس سال اپنے والد والدہ ، بیوی اوربیٹے کے ساتھ اللہ کی مہربانی سے حج پر جا رہا ہوں، مجھے آپ سے یہ مسئلہ معلوم کرنا ہے کہ میرا جو بیٹا ہے وہ صرف ۱۸ مہینے کا ہے ، کیا اس کو بھی احرام پہنانا پڑیگا ؟ یا پھر وہ اپنے گھر کے لباس میں رہ سکتا ہے ؟

    جواب نمبر: 40855

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 962-962/N=11/1433 بلوغ سے پہلے انسان احکامِ شرع کا مکلف نہیں ہوتا اس لیے سفر حج کے دوران مکہ مکرمہ وغیرہ میں آپ اپنے بچے کو گھر کے لباس میں رکھ سکتے ہیں، احرام پہنانا ضروری نہیں، اور اگر آپ اپنے بیٹے کو بھی صرف حج یا عمرہ وحج دونوں کرائیں تو آپ کو بچے کے حج یا حج وعمرہ دونوں کا ثواب ملے گا۔ اور اس کا طریقہ یہ ہے کہ آپ اپنے ساتھ بچے کا بھی احرام باندھیں اوراس کے بدن سے سلے ہوئے کپڑے اتار لیں اور جملہ محظورات احرام سے بچائیں اوراسے لے کر طواف وسعی کریں اور اس کی طرف سے رمی بھی کریں اوراس کا حلق یا قصر کرائیں، ہاں البتہ اس کی طرف سے دوگانہ طواف نہیں پڑھیں گے کیونکہ نماز میں نیابت جائز نہیں، اور بچہ نے اگر کسی جنایت کا ارتکاب کرلیا تو کوئی دم وغیرہ واجب نہ ہوگا کیونکہ وہ غیر مکلف ہے کذا فی عامة کتب الفقہ والفتاوی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند