• عبادات >> حج وعمرہ

    سوال نمبر: 37421

    عنوان: طواف كے لیے حیض كا دوا كے ذریعہ روكنا كیسا ہے؟

    سوال: میں جاننا چاہتا ہوں کہ نو ذی الحجہ کو کسی عورت کو حیض آ جائے اور تیرہ ذی الحجہ کو اس کی وطن واپسی ہو اور وہ عورت طواف زیارت نہ کر سکتی ہو کیوں کہ اس کے پاس وقت نہیں ہے تو اس صورت میں اسے کیا کرنا ہے؟ایک مولانا نے بتایا ہے کہ اسے طواف زیارت کرنا پڑیگا اور پھر اسے بڑے جانور کا دم دینا ہوگا۔ براہ کرم، قرآن وحدیث کی روشنی میں اس کا جواب دیں ۔

    جواب نمبر: 37421

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(ب): 379=311-3/1433 ممکن ہو تو حیض کو روکنے والی کوئی گولی کھالے، جب حیض بند ہوجائے تو غسل کرکے طواف کرے، اور اگر یہ ممکن نہ ہو تو پھر اسی ناپاکی کی حالت میں طواف کرے، اور بعد میں دم دیدے۔ ================= جواب درست ہے البتہ شروع شروع یہ کوشش کرنی چاہیے کہ کسی بھی طرح فلائٹ کی تاریخ آگے بڑھ جائے تاکہ حیض کی حالت میں مسجد میں داخلہ نہ ہو، اگر کسی بھی طر کوئی تدبیر کارگر نہ ہوسکے تو مجبوری کی صورت میں حالتِ حیض ہی میں طواف کرلے اور بڑے جانور کی قربانی کرادے۔ (ل)


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند