• عبادات >> حج وعمرہ

    سوال نمبر: 32701

    عنوان: (۱) کیا ریاض سے مکہ مکرمہ کی زیارت کرسکتے ہیں؟ اور کیا عمرہ کی نیت کے بغیر حرم میں نماز پڑھ سکتے ہیں؟(۲) کیا میری بیوی حالت حیض میں عمرہ کی نیت کے بغیر مکہ مکرمہ کی زیارت کرسکتی ہے؟

    سوال: (۱) کیا ریاض سے مکہ مکرمہ کی زیارت کرسکتے ہیں؟ اور کیا عمرہ کی نیت کے بغیر حرم میں نماز پڑھ سکتے ہیں؟(۲) کیا میری بیوی حالت حیض میں عمرہ کی نیت کے بغیر مکہ مکرمہ کی زیارت کرسکتی ہے؟

    جواب نمبر: 32701

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(م): 1093=1093-7/1432 ریاض سے مکہ مکرمہ کی زیارت کرسکتے ہیں، منع نہیں ہے، کوئی کہیں سے بھی مکہ مکرمہ کی زیارت کرسکتا ہے، البتہ میقات سے احرام کے بغیر گزرنا ممنوع ہے، حرم شریف میں نماز پڑھنا چاہتے ہیں اور آپ میقات سے باہر ہیں تو میقات سے عمرہ وغیرہ کا احرام باندھ کر جانا ہوگا، آپ کی بیوی کے لیے بھی یہی حکم ہے، یعنی میقات سے احرام باندھ کر جائے گی، چاہے حیض کی حالت میں ہو، البتہ حیض میں طواف نہیں کرسکتی اور مسجد حرام میں داخل بھی نہیں ہوسکتی، پاکی کے بعد عمرہ کرے گی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند