• عبادات >> حج وعمرہ

    سوال نمبر: 28470

    عنوان: بیماری کی وجہ سے طواف وداع نہیں کرسکا، بیماری سے پہلے اپنے والد کی طرف سے نفل طواف ضرور کیاتھا ، کیا یہ نفل طواف طواف وداع کا بدل ہوگا یا نہیں؟ اگر نہیں تو اب کیا کروں؟

    سوال: بیماری کی وجہ سے طواف وداع نہیں کرسکا، بیماری سے پہلے اپنے والد کی طرف سے نفل طواف ضرور کیاتھا ، کیا یہ نفل طواف طواف وداع کا بدل ہوگا یا نہیں؟ اگر نہیں تو اب کیا کروں؟

    جواب نمبر: 28470

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(ل): 17=13-1/1432

    طواف وداع میں مستحب یہی ہے کہ ارادہ سفر کے وقت طوافِ وداع کیا جائے، البتہ طوافِ وداع کاوقت طوافِ زیارت کے بعد سے ہی شروع ہوجاتا ہے، نیز فقہاء نے یہ بھی صراحت کی ہے کہ اگر سفر کا ارادہ ہونے کے بعد نفل کی نیت سے بھی طواف کرلیا جائے تو وہ بھی طوافِ وداع کے قائم مقام ہوجاتا ہے، اس لیے اگر آپ نے طوافِ زیارت کے بعد کوئی نفل طواف کرلیا تھا تو وہ طوافِ وداع کے قائم مقام ہوگیا، اب مستقلاً طوافِ وداع کی نیت سے طواف نہ کرنے کی وجہ سے کوئی دم آپ پر واجب نہ ہوگا۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند