• عبادات >> حج وعمرہ

    سوال نمبر: 18496

    عنوان:

    کیا حج کے بعد چالیس دن تک حاجی کی دعا قبول ہوتی ہے؟ احرام کی حالت میں فیس ماسک لگانا کیسا ہے؟

    سوال:

    کیا حج کرنے کے بعد چالیس دن تک حاجی کی دعا قبول ہوتی ہے؟ کیا یہ صحیح حدیث ہے؟ (۲)میں نے یہ بھی سنا ہے کہ حج سے واپس ہونے کے چالیس دن بعد تک اللہ تعالی بندے کی تمام دعائیں قبول کرتے ہیں۔ کیا یہ گھڑی ہوئی حدیث ہے؟ برائے کرم حدیث سے حوالہ عنایت فرماویں۔ (۳)کیا مردوں اورعورتوں کے لیے احرام میں فیس ماسک (ماسک سے چہرہ کو چھپانا) کا استعمال کرسکتے ہیں اور احرام کے دوران مردوں اورعورتوں کو چہرہ کے کس حصہ کو کھلا رکھنا ضروری ہے؟

    جواب نمبر: 18496

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(د): 93=93-1/1431

     

    (۱) (۲) ان الفاظ میں کوئی حدیث بسیار تلاش کے بعد بھی نہ مل سکی، البتہ اس کے قریب قریب حضرت عمر رضی اللہ عنہ کا اثر حدیث کی کئی کتابوں میں مذکور ہے، چنانچہ مصنف ابن ابی شیبہ میں ہے کہ حضرت عمر رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں: حاجی او رحاجی جس کے لیے مغفرت طلب کرے تو ذی الحجہ کے بقیہ دن محرم صفر اور ربیع الاول کے دس دن تک اس کی دعائے مغفرت قبول کی جاتی ہے، نیز ایک حدیث میں ہے کہ جب تم حاجی سے ملاقات کرو تو اس سے دعائے مغفرت کی درخواست کرو، اس لیے کہ اس کے اپنے گھر میں داخل ہونے سے پہلے تک دعاء قبول کی جاتی ہے۔

    (۳) اگر فیس ماسک سے کامل چہرہ یا چوتھائی چہرہ چھپ جائے تو مرد وعورت دونوں کے لیے اس کا استعمال ناجائز ہے، نیز مردوں اور عورتوں دونوں کو حالت احرام میں پورا چہرہ کھلا رکھنا ضروری ہے، باقی حالت احرام میں بھی عورتوں سے پردہ کا حکم ساقط نہیں ہوتا اجنبی مردوں کے سامنے آجانے پر پنکھا وغیرہ سے چہرہ ڈھکنا ضروری ہے، یا چہرہ پر ایسا کپڑا ڈال لے جو چہرہ سے نہ لگے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند