• عقائد و ایمانیات >> حدیث و سنت

    سوال نمبر: 606478

    عنوان:

    مساجد کی زیارت کیلئے جانا

    سوال:

    میں نے کہیں پڑھا ہے کہ مسجد اقصیٰ ۔ مسجد نبوی اور مسجد الحرام کے علاوہ کسی اور مسجد کی خصوصی طور پر زیارت کے لیے نہیں جانا چاہئے ۔ براہ کرم کسی حوالہ سے رہنمائی فرما دیں کہ یہ بات صحیح ہے یا نہیں؟ شکریہ

    جواب نمبر: 606478

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 157-114/B=02/1443

     جاہلیت کے زمانہ میں لوگ بہت سے مقامات کو لوگ باعظمت سمجھ کر خصوصیت کے ساتھ وہاں کا سفر کرتے تھے اور وہاں عبادت کرنا افضل سمجھتے تھے تو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے اس کا سد باب کرنے کے لئے فرمایا: لا تشد الرحال إلا إلی ثلثة مساجد: مسجد الحرام، والمسجد الأقصیٰ ومسجدی ہذا (بخاری ومسلم) بحوالہ مشکاة، ص: 68) یعنی بطور خاص کسی مسجد کے لیے سفر نہ کیا جائے۔ اگر کسی مسجد کے لیے سفر کرنا ہے تو صرف تین مسجدوں کے لیے سفر کرسکتے ہیں۔ مسجد حرام، مسجد اقصیٰ اور مسجد نبوی کے لئے۔ یہ حدیث صحیح ہے، بخاری ومسلم کی حدیث ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند