• عقائد و ایمانیات >> حدیث و سنت

    سوال نمبر: 603550

    عنوان:

    انار كی فضیلت كی تحقیق

    سوال:

    ماہنامہ محاسن اسلام شمارہ257 فروری 2021 کے صفحہ 29 پر ہے کہ ابن عباس رضی اللہ عنہما نے انار کے ایک دانہ کو اٹھایا اور اس کو کھالیا ان سے کہا گیا آپ نے یہ کیوں کیا ؟ فرمایا مجھے یہ بات پہنچی ہے کہ زمین کے ہر انار میں جنت کے دانوں میں سے ایک دانہ ڈالا جاتا ہے شاید یہ وہی ہو - ( طبرانی بسند صحیح ) پھر فائدہ میں لکھا ہے : اس ارشاد کو آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم سے مرفوعا بھی روایت کیا گیا ہے - ( الطب النبوی ، کنزالعمال ) سوال یہ ہے کہ کیا یہ حدیث صحیح اور ثابت ہے خواں مرفوعا ہو یا غیر مرفوع ؟

    جواب نمبر: 603550

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 597-514/D=08/1442

     سوال میں انار کی فضیلت کے بارے میں ذکر کردہ روایت موضوع اور گھڑی ہوئی ہے؛ لہٰذا اس کا کوئی اعتبار نہیں ہے، جمہور آئمہٴ جرح و تعدیل نے مذکورہ روایت کو باطل قرار دیا ہے۔ قال الذہبي في المیزان: عن ابن عباس رضي اللہ عنہما قال: سمعت النبيّ صلی اللہ علیہ وسلم یقول: ”ما من رمّان من رمّانکم إلاّ وہو یلقح بحبّة من رمّان الجنّة“ ہذا الحدیث من أبا طیلہ (4/59)۔ وقال الدار قطني: لیس بشیء (4/15)۔ ورواہ ابن الجوزي فی الموضوعات (2/285)۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند