• عقائد و ایمانیات >> حدیث و سنت

    سوال نمبر: 173036

    عنوان: كیا گاےٴ کے گوشت میں بیماری ہے؟

    سوال: ایک صاحب کا ویڈیو دیکھ رہے تھے اس میں وہ بیان کر رہے تھے کہ گاےٴ کے دودھ اور مکھن میں شفاء ہے اور گاےٴ کے گوشت میں بیماری۔ کیا یہ کوئی حدیث ہے؟ جو صاحب یہ بیان کر رہے تھے انہوں نے اس حدیث کا حوالہ "الجامع صحیح" کی حدیث نمبر 4061 سے دیا ہے۔ انہوں نے الجامع صحیح کے بارے میں یہ نہیں بتایا کہ اس مراد الجامع صغیر ہے یا کوئی اور کتاب۔ ان صاحب نے جو بات بیان کی کیا وہ مستند حدیث ہے؟ اور اگر مستند ہے تو اس حدیث کا مطلب کیا ہے؟ براہ کرم رہنمائی فرمائیں ۔

    جواب نمبر: 173036

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 9-304/M=04/1441

    گائے کے دودھ سے متعلق جو حدیث ہے وہ صحیح اور ثابت ہے اور اس حدیث میں صرف گائے کا دودھ پینے کا حکم ملتا ہے جیسا کہ ”سنن کبری“ میں ہے، ”عن عبد اللہ بن مسعود رضي اللہ عنہ قال: ما أنزل اللہ داء إلاّ أنزل لہ دواء فعلیکم بألبان البقر فإنّہا ترمّ من الشّجر کلّہ ۔ (أخرجہ النسائی في السنن الکبری، رقم الحدیث: ۶۸۶۳) حضرت عبد اللہ ابن مسعود رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: اللہ تعالی نے جو بھی بیماری نازل کی اس کی دوا بھی نازل کی، سو تم گائے کا دودھ پیو اس لئے کہ وہ ہر طرح کے درخت سے چرتی ہے۔ اس حدیث کی روشنی میں یہ کہنا صحیح ہے کہ گائے کے دودھ میں شفاء ہے؛ البتہ گائے کے مکھن میں شفاء اور اس کے گوشت میں بیماری ہے، اس حدیث کی بعض لوگوں نے تصحیح کی ہے اور بعض لوگوں نے تضعیف کی ہے۔ قال الہیثمي في المجمع والمرأة لم تسم وبقیة رجالہ ثقات (۵/۹۰) ولکن نقل أبونعیم في الطبّ النبوي عن زہیر ”انّہا کانت صدوقة ۔ (۲/۶۹۲) ولہ شاہد حدیث ابن مسعود أخرجہ الحاکم في المستدرک (۴/۴۴۸: ۸۲۳۲) وقال الحاکم صحیح الإسناد ولم یخرجاہ ۔ وقال الذہبيّ في التلخیص: فیہ سیف وہاہ ابن حبان ۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند