• معاشرت >> ماکولات ومشروبات

    سوال نمبر: 41278

    عنوان: جھینگے کی حلت اور حرمت میں اکابر مفتیانِ کرام کے درمیان اختلاف ہے

    سوال: مجھے المانیہ میں کافی حلال اور حرام کی مسائل درپیش ہیں : (۱) پہلا یہ کہ جھنگا کھانا حلال ہے یا مکروہ.؟ (۲) دوسرا یہ کہ یہاں پر جو گوشت ملتے ہیں اس پر حلال لکھا ہوا ہوتا ہے کیا وہ کسی بھی کمپنی کا کھا سکتے ہیں جس پر حلال لکھا ہو؟ (۳)یہا ں کے مصنوعات پر ای کوڈ س ہوتے ہیں ۔ اب کون سے حلال ہیں یا کون سے حرام ہیں، انکا پتا کس طرح سے چلے گا.؟ مہربانی کرکے اس سلسلے میں میری مدد کریں۔

    جواب نمبر: 41278

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 919-914/N=10/1433 (۱) جھینگے کی حلت اور حرمت میں اکابر مفتیانِ کرام کے درمیان اختلاف ہے، احتیاط اس میں ہے کہ خود کھانے سے پرہیز کرے اور کوئی دوسرا کھاتا ہو تو اس پر نکیر نہ کرے۔ (۲) نہیں، بلکہ جو کمپنیاں حلال جانور شرعی طریقہ پر ذبح کراتی ہیں، صرف ان کا گوشت کھاسکتے ہیں اور حلت کے لیے صرف پیکٹ پر حلال لکھا ہونا کافی نہیں۔ (۳) آپ کے یہاں کے جو علما مصنوعات کے اجزائے ترکیبیہ کے متعلق تحقیقی معلومات رکھتے ہیں، ان سے دریافت کریں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند