• متفرقات >> دعاء و استغفار

    سوال نمبر: 61265

    عنوان: اگر پالتو پرندے دانہ پانی کے نہ ھونے کی وجہ سے مر جائیں تو اس کا کیا کفارہ ادا کریں؟

    سوال: اگر پالتو پرندے دانہ پانی کے نہ ھونے کی وجہ سے مر جائیں تو اس کا کیا کفارہ ادا کریں؟

    جواب نمبر: 61265

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 1002-1004/N=11/1436-U اگر آدمی پرندوں کو محبوس کرکے رکھے تو اس پر پرندوں کے لیے دانہ پانی کا نظم کرنا ضروری ہوتا ہے، پس اگر اس شخص نے کوتاہی کی اور پرندوں کو دانہ پانی نہیں مل اور اس نے انھیں چھوڑا بھی نہیں کہ وہ خود اپنا رزق تلاش کرلیتے، جس کی بنا پر وہ مرگئے تو اس صورت میں یہ شخص گنہ گار ہوگا، اور اس کا کفارہ یہ ہے کہ آدمی واقعی ندامت وپشیمانی کے ساتھ اللہ تعالیٰ کے حضور میں سچی توبہ واستغفار کرے، ایک حدیث میں اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: ایک عورت کو اس بلی کی وجہ سے عذاب ہوا جو اس نے باندھ رکھی تھی، نہ اسے کھلاتی تھی اور نہ چھوڑتی تھی، یہاں تک کہ مرگئی (مشکاة شریف ص ۱۶۸ بحوالہ: صحیحین) قال في رد المحتار (کتاب الحظر والإباحة، باب الاستبراء وغیرہ ۹: ۵۷۵ ط مکتبة زکریا دیوبند): قال في المجتبی رامزا: لا بأس بحبس الطیور والدجاج في بیتہ، ولکن یعلفہا إلخ اھ، وقال رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم: التائب من الذنب کمن لا ذنب لہ (مشکاة شریف ص ۲۰۶ بحوالہ: سنن ابن ماجہ وغیرہ)، والحدیث حسنہ ابن حجر العسقلانی کما في المقاصد الحسنة للسخاوی رحمہ اللہ۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند