• متفرقات >> دعاء و استغفار

    سوال نمبر: 60965

    عنوان: میرے خالہ زبھائی کی شادی کو بیس سال ہوگئے ہیں، پر پچھلے دس سال سے وہ اپنی بیوی سے بولتے نہیں ہیں، بالکل بھی نہیں، لیکن میری بھابھی میری خالہ کے گھر رہتی ہے، میرے بھائی نہ ان کے پاس سوتے ہیں ، نہ کسی طرح کا خرچ اٹھاتے ہیں ، بھابھی اللہ سے بہت دعا کرتی ہیں پر مسئلہ حل نہیں ہوتا، بہت عاملوں کو بھی دکھایا ، مگر کوئی کچھ بتاتے ہیں اور کوئی کچھ اور۔ وہ خود تہجد کی پابندی کرتی ہیں اور جو کوئی بھی جو وظیفہ بتاتاہے وہ پڑھتی ہیں۔

    سوال: حضرت، یہ مسئلہ میری خالہ کے گھر ہے، میرے خالہ زبھائی کی شادی کو بیس سال ہوگئے ہیں، پر پچھلے دس سال سے وہ اپنی بیوی سے بولتے نہیں ہیں، بالکل بھی نہیں، لیکن میری بھابھی میری خالہ کے گھر رہتی ہے، میرے بھائی نہ ان کے پاس سوتے ہیں ، نہ کسی طرح کا خرچ اٹھاتے ہیں ، بھابھی اللہ سے بہت دعا کرتی ہیں پر مسئلہ حل نہیں ہوتا، بہت عاملوں کو بھی دکھایا ، مگر کوئی کچھ بتاتے ہیں اور کوئی کچھ اور۔ وہ خود تہجد کی پابندی کرتی ہیں اور جو کوئی بھی جو وظیفہ بتاتاہے وہ پڑھتی ہیں۔ اس عید الفطر کو تو وہ تھوڑا بولے تھے، پر انہوں نے بھابھی سے بولنے سے بالکل منع کردیا ، بھابھی نے کہاں کہ مجھ سے اگر کوئی غلطی ہوگئی ہے تو معاف کردوتو بھائی نے کہا کہ میں نے تجھے معاف کردیا ، پر بولوں گا نہیں۔بات ایسی کچھ نہیں ہوئی ، بس دس سال پہلے زوجین میں لڑائی جھگڑے ہوتے رہتے ہیں ، وہی ہوتاتھااور کچھ نہیں۔آپ سے گذارش ہے کہ ایسا کچھ بتائیں کہ وہ کم سے کم ان سے بولنے تو لگے ۔ بھابھی بہت روتی ہیں اور پریشان رہتی ہیں۔ بھائی کا نام ندیم، بھابھی کی والدہ کا نام نسیم،بھابھی کا نام تحسین، بھابھی کی والدہ حسینہ ۔

    جواب نمبر: 60965

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa ID: 913-877/Sn=1/1437-U (الف) صورت مسئولہ میں بہتر صورت یہ ہے کہ آپ کے خالہ زاد بھائی کے خاندان کے کچھ معاملہ فہم سمجھ دار لوگ، اسی طرح آپ کی بھابھی کے خاندان کے درمیان صلح صفائی کرادیں اور ان کے درمیان جو ناراضگی چلی آرہی ہے اسے ختم کرنے کی کوشش کریں۔ اخلاص کے ساتھ اگر فریقین کوشش کریں گے تو میاں بیوی کے تعلقات ان شاء اللہ خوشگوار ہوجائیں گے۔ (ب) نیز اپنی بھابھی سے کہلوادیں کہ وہ درج ذیل عمل کریں: بعد نماز عشا گیارہ دانے سیاہ مرچ لے کر اول آخر گیارہ بار درود شریف اور درمیان میں گیارہ تسبیح یا لطیف یا ودودُ کی پڑھیں اور خاوند کے مہربان ہونے کا خیال رکھیں، جب سب پڑھ چکیں تو ان سیاہ مرچوں پر دم کرکے تیز آنچ میں ڈالدیں اور اللہ تعالیٰ سے دعا کریں، ان شاء اللہ خاوند مہربان ہوجائے گا، کم ازکم چالیس روز یہ عمل کریں۔ (بہشتی زیور، ص: ۸۶، ج: ۹)


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند