• متفرقات >> دعاء و استغفار

    سوال نمبر: 605217

    عنوان:

    توبہ کی قبولیت کے بارے میں شكوك وشبہات

    سوال:

    حضرت مفتیان کرام، امید کرتا ہوں اپ سب بخیریت ہوں گے ۔میرے توبہ کے بارے میں2 سوالات ہیں ایک یہ کہ میں نے کسی سے سنا ہے توبہ کرنے کے بعد تین دفعہ سے زیادہ اس گناہ کو یاد کرنا گناہ ہے تو کیا اب بار بار اس گناہ کے توبہ کے قبولیت کے بارے میں سوچنا اور بار بار اس گناہ کے قبولیت کے شک ہونے میں اس گناہ پر توبہ کرنا خود ایک گناہ بن جائیگا؟

    دوسرا سوال یہ کہ سورت نساء کی ایت نمبر 110 اور 116 کی مکمل اور جامع تفسیر چاہیے کیونکہ 110 میں ہر طرح کی گناہ کی معافی کی یقین دہانی کا بیان ہے لیکن ساتھ میں 116 میں فرمایا جاتا ہے کہ اللہ جس گناہ کو چاہے معاف کریگا، تو مہربانی فرماکر میری ان شکوک وشبہات کو دور کریں۔

    جواب نمبر: 605217

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:1050-879/L=12/1442

     توبہ کرلینے کے بعد اسے مکرر سہ کرر یاد کرناگناہ نہیں ہے ؛ البتہ جب آدمی صدق دل سے توبہ کرلے اور آئندہ نہ کرنے کا عزم کرلے اور وہ اسی پر برقرار رہے تو اس کو امید رکھنی چاہیے کہ میری توبہ قبول ہوگئی ، اگر توبہ کی قبولیت کے بارے میں وساوس آئیں تو ان کی طرف توجہ نہ دینی چاہیے ، جہاں تک سورہ نساء کی آیت نمبر ۱۱۰اور آیت نمبر ۱۱۶میں تعارض کا مسئلہ ہے تو اس میں کوئی تعارض نہیں بلکہ پہلی آیت مومنین کے بارے میں کہ آدمی مومن رہتے ہوئے کوئی بھی گناہ کرلے خواہ صغیرہ ہو یا کبیرہ اور پھر توبہ کرلے تو اللہ تعالی اس کو معاف فرمادیں گے ؛ البتہ اگر آدمی شرک کرکے اسلام سے خارج ہوجائے یا پہلے سے ہی کوئی مشرک ہو اوروہ اسی حال پر باقی رہے تو اس شرک کواللہ تعالی معاف نہیں فرمائیں گے، ہاں! اگر وہ دنیا میں رہتے ہوئے شرک سے تائب ہوجائے اور مسلمان ہوجائے تو اللہ تعالی اس کے اسلام کوبھی قبول فرمالیں گے ۔

    وَمَنْ یَعْمَلْ سُوئًا أَوْ یَظْلِمْ نَفْسَہُ ثُمَّ یَسْتَغْفِرِ اللَّہَ یَجِدِ اللَّہَ غَفُورًا رَحِیمًا (النساء:110) إِنَّ اللَّہَ لَا یَغْفِرُ أَنْ یُشْرَکَ بِہِ وَیَغْفِرُ مَا دُونَ ذَلِکَ لِمَنْ یَشَاءُ وَمَنْ یُشْرِکْ بِاللَّہِ فَقَدْ ضَلَّ ضَلَالًا بَعِیدًا (النساء:116) إِنَّ اللَّہَ لا یَغْفِرُ أَنْ یُشْرَکَ بِہِ فیموت عَلَیْہ یعنی الیہود وَیَغْفِرُ مَا دُونَ ذلِکَ الشرک لِمَنْ یَشاءُ لمن مات موحدا فمشیئتہ- تبارک وتعالی- لأہل التوحید․ (تفسیر مقاتل بن سلیمان 1/ 377)


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند