• متفرقات >> دعاء و استغفار

    سوال نمبر: 604350

    عنوان:

    گناہ سرزد ہونے كے بعد خود كشی كرنے كی ضرورت نہیں

    سوال:

    دو سال ہو رہے ہیں مجھے مجھ سے زنا سرزد ہوا چار بار وہ میرا بہت ہی قریبی رشتہ دار ہے بلکہ میرے چچا کی بیوی یعنی میرا چچی ہے ۔کئی بار گناہ کرنے کے بعد مجھے احساس ہوا کہ میں نے بہت ہی گھٹیا حرکت اور کبیرہ گناہ کیا ہے ۔انتہائی شرمندہ ہوں ۔توبہ بھی کیا ہے سچے دل سے شدید بے چینی اور مایوسی کا شکار ہوں جس کی وجہ سے سکون نہیں ہے کئی بار رو رو کے معافی مانگ چکا ہو اللہ پاک سے۔اس کے لیے کیا حکم ہے دل کرتا ہے کہ خود کشی کر لوں میرے لئے دعا بھی کریں جزاک اللہ۔جلد از جلد مجھے جواب دیں۔ شکریہ

    جواب نمبر: 604350

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:866-661/L=9/1442

     خودکشی کرنے کی ضرورت نہیں ؛البتہ نادم ہوکر صدق دل سے توبہ واستغفار کریں اور چچی سے مکمل پردہ کریں اور آئندہ اعمال ِ خیر کی کثرت کریں ،اگر آپ ایسا کرلیتے ہیں تو امید ہے کہ اللہ رب العزت آپ کو معاف فرمادیں گے اور اپنے نیک بندوں میں شامل فرمادیں گے ،کتنے ہی اولیاء کرام ایسے گزرے ہیں جن کی ابتدائی حالت انتہائی خراب رہی ؛لیکن جب انھوں نے صدق دل سے توبہ کرنے کے بعد اپنے کو نیک کاموں میں لگایا تو اللہ نے انھیں اونچا مقام نصیب فرمایا ،انسان کو اللہ کی رحمت سے ناامید نہیں ہونا چاہیے ۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند