• عبادات >> احکام میت

    سوال نمبر: 603545

    عنوان: نابالغ بچے کی قبر پر قرآن پڑھنا؟ 

    سوال:

    سوال یہ ہے کہ کیا نابالغ بچوں کی تدفین کے بعد سورة الفاتحہ اور سورة البقرہ کا شروع اور سورة البقرہ کا آخر پڑھنا چاہیے یا نہیں؟ جواب ضرور مرحمت فرمائیں ۔ شکریہ

    جواب نمبر: 603545

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:585-464/N=8/1442
    جس روایت میں یہ ہدایت آئی ہے، اس میں مطلق میت کا ذکر ہے، بالغ کی تخصیص نہیں ہے؛ لہٰذا نابالغ بچوں کی تدفین کے بعد بھی میت کے سرہانے سور بقرہ کی ابتدائی آیتیں اور پائینتی جانب سورہ بقرہ کی آخری آیتیں پڑھنا مستحب ہوگا۔
    عن عبد اللّٰہ بن عمر قال: سمعت النبي صلی اللّٰہ علیہ وسلم یقول: ”إذا مات أحدکم فلا تحبسوہ وأسرعوا بہ إلی قبرہ ولیقرأ عند رأسہ فاتحة البقرة وعند رجلیہ بخاتمة البقرة“، رواہ البیھقي في شعب الإیمان وقال: ”والصحیح أنہ موقوف“۔ (مشکاة المصابیح،کتاب الجنائز، باب دفن المیت، الفصل الثالث، ص ۱۴۹، ط: المکتبة الأشرفیة، دیوبند)۔
    ویستحب ……جلوس بعد دفنہ لدعاء وقراء ة بقدر ما ینحر الجزور ویفرق لحمہ (الدر المختار مع رد المحتار، کتاب الصلاة، باب صلاة الجنازة، ۳: ۱۴۳، ط: مکتبة زکریا دیوبند، ۵: ۳۴۷، ت: الفرفور، ط: دمشق)۔
    قولہ: ”وجلوس إلخ“:…… وکان ابن عمر یستحب أن یقرأ علی القبر بعد الدفن أول سورة البقرة وخاتمتھا (رد المحتار)۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند