• عبادات >> احکام میت

    سوال نمبر: 602528

    عنوان:

    كیا نماز جنازہ دو مرتبہ پڑھی جاسكتی ہے؟

    سوال:

    کیا احناف کے نزدیک دو جنازے جائز ہیں ؟ کیا غائبانہ جنازہ بھی جائز ہے ؟ یعنی میت موجود نہ ہو ، بس میت کا تصور کر کے جنازہ پڑھنا۔ اگر جائز ہے تو اسکا تفصیلا طریقہ بھی بتادیں۔

    جواب نمبر: 602528

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 436-444/M=07/1442

     (۱) دو جنازے سے مراد اگر ایک ہی میت کی دو مرتبہ نماز جنازہ پڑھنے کا حکم معلوم کرنا ہے تو جواب یہ ہے کہ یہ احناف کے نزدیک مکروہ ہے، اس میں تکرار مشروع نہیں؛ البتہ اگر ولی (جس کو حق تقدم حاصل ہے) کی اجازت کے بغیر نماز جنازہ پڑھ لی گئی اور اس میں ولی شریک نہیں ہوا تو ولی اعادہ کرسکتا ہے اور اس کے ساتھ وہ لوگ بھی شامل ہوسکتے ہیں جو پہلی نماز میں شریک نہیں تھے۔

    (۲) غائبانہ نماز جنازہ بھی احناف کے نزدیک مشروع نہیں۔ ہکذا فی کتب الفتاوی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند