• عقائد و ایمانیات >> دعوت و تبلیغ

    سوال نمبر: 15099

    عنوان:

    میں ایک لڑکے سے محبت کرتی ہوں جو کہ یوپی میں رہتاہے جب کہ میں ممبئی میں رہتی ہوں، ہم دونوں ایک دوسرے سے اتنی شدید محبت کرتے ہیں ، کہ میں اس کے لیے سب کچھ کرسکتی ہوں۔ میری اس سے ملاقات نیٹ پر ہوئی اورابھی تک ہماری ایک دوسرے سے ملاقات نہیں ہوئی ہے، صرف ایک دوسرے کا فوٹو دیکھا ہے۔میرے والدین اس کے بارے میں نہیں جانتے ہیں۔ مفتی جی میں نے محبت میں ایک بہت بڑا گناہ کیا ہے۔ (۱)ہم دونوں ایک دوسرے سے انٹرنیٹ پر بہت دیر رات تک بات چیت کیا کرتے تھے اور وہ بھی سیکسی بات چیت۔ (۲)اس سے ملاقات اتفاقی طور پر ہوئی اوراس نے مجھ سے صرف باڈی (سینہ بند)پہن کرکے میری تصویر بھیجنے کو کہا۔ پہلے میں نے انکار کردیا لیکن چونکہ وہ ناراض ہوگیا اس لیے میں نے اس کو بھیج دیا۔ اس کے بعد اس نے مجھ سے ننگی تصویر بھیجنے کو کہا۔ بہت سارے بحث و مباحثہ کے بعد میں نے اس کوننگی تصویر بھیج دیا۔ اس کے بعداس نے مجھ سے .......

    سوال:

    میں ایک لڑکے سے محبت کرتی ہوں جو کہ یوپی میں رہتاہے جب کہ میں ممبئی میں رہتی ہوں، ہم دونوں ایک دوسرے سے اتنی شدید محبت کرتے ہیں ، کہ میں اس کے لیے سب کچھ کرسکتی ہوں۔ میری اس سے ملاقات نیٹ پر ہوئی اورابھی تک ہماری ایک دوسرے سے ملاقات نہیں ہوئی ہے، صرف ایک دوسرے کا فوٹو دیکھا ہے۔میرے والدین اس کے بارے میں نہیں جانتے ہیں۔ مفتی جی میں نے محبت میں ایک بہت بڑا گناہ کیا ہے۔ (۱)ہم دونوں ایک دوسرے سے انٹرنیٹ پر بہت دیر رات تک بات چیت کیا کرتے تھے اور وہ بھی سیکسی بات چیت۔ (۲)اس سے ملاقات اتفاقی طور پر ہوئی اوراس نے مجھ سے صرف باڈی (سینہ بند)پہن کرکے میری تصویر بھیجنے کو کہا۔ پہلے میں نے انکار کردیا لیکن چونکہ وہ ناراض ہوگیا اس لیے میں نے اس کو بھیج دیا۔ اس کے بعد اس نے مجھ سے ننگی تصویر بھیجنے کو کہا۔ بہت سارے بحث و مباحثہ کے بعد میں نے اس کوننگی تصویر بھیج دیا۔ اس کے بعداس نے مجھ سے میری فرج کی تصویر مانگی، دوبارہ بات چیت کے بعد میں نے اس کو بھیج دیا۔اب میں جانتی ہوں کہ میں نے بہت بڑا گناہ کیا ہے ، میں نے ہی نہیں بلکہ اس نے بھی۔میں نے ا س سے چپکے سے شادی کرنے کے لیے بھی کہا۔ نیز ہم نے چپکے سے شادی بھی کرلی۔لیکن آج آپ کی ویب سائٹ پر مسئلہ پڑھنے کے بعد مجھ کو معلوم ہوا کہ میرا نکاح درست نہیں ہے، کیوں کہ میرے ساتھ کوئی ولی نہیں تھا جب میں نے نکاح قبول کیا۔ مفتی صاحب برائے کرم میری مدد کریں کہ میں کیسے اپنے گناہوں کو صاف کرسکتی ہوں اور اس کے گناہوں کو بھی؟ حضرت مجھ کو پہلے یہ سب کچھ معلوم نہیں تھا لیکن اس نے تو عالم کا کورس کیا ہے او رہر ایک مسئلہ جانتا ہے۔ برائے کرم مفتی صاحب میری مدد کریں، میں اپنے اللہ، حضور اقدس صلی اللہ علیہ وسلم کو ناراض نہیں رکھ سکتی ۔میں جانتی ہوں کہ میں بہت بڑی گناہ گار ہوں۔ میں کیسے اپنی غلطیوں کا کفارہ بھروں۔ برائے کرم مجھے بتائیں میں دوبارہ اتنی گھناؤنی غلطیاں کسی بھی دباؤ میں آکر نہیں کروں گی۔ والسلام

    جواب نمبر: 15099

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 1233=/ل

     

    پہلے تو آپ دو رکعت نفل پڑھ کر صدق دل سے توبہ واستغفار کریں، اور آئندہ اس طرح کی حرکت نہ کرنے کا عزم کریں اور روزانہ صبح و شام تین تین مرتبہ استغفار أستغفر اللہ الذي لا إلہ إلا ھو القیوم وأتوب إلیہ پڑھتی رہیں، یہی آپ کے گناہوں کا کفارہ ہے، حدیث شریف میں ہے: التائب من الذنب کمن لا ذنبہ لہ گناہ سے توبہ کرنے والا ایسا ہے جیسا کہ اس نے گناہ ہی نہیں کیا۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند