• عقائد و ایمانیات >> دعوت و تبلیغ

    سوال نمبر: 13176

    عنوان:

    میں یہ جاننا چاہتا ہوں کہ عورت اگر تبلیغ کے لیے جانا چاہے تو اس کے ساتھ محرم کا ہونا ضروری ہے، کیا اگر محرم نہ ہو تو وہ تبلیغ نہیں کرسکتی؟

    سوال:

    میں یہ جاننا چاہتا ہوں کہ عورت اگر تبلیغ کے لیے جانا چاہے تو اس کے ساتھ محرم کا ہونا ضروری ہے، کیا اگر محرم نہ ہو تو وہ تبلیغ نہیں کرسکتی؟

    جواب نمبر: 13176

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 979=920/ب

     

    اگر عورت مسافت شرعی یا اس سے زیادہ دور جانا چاہتی ہے تو اس کے ساتھ محرم کا ہونا ضروری ہے، البتہ مسافت شرعی سے کم مسافت کے اندر سفر کرنا ہو نیز فتنوں کا اندیشہ نہ ہو تو پھر تنہا بھی سفر کرسکتی ہے، مگر اس زمانہ میں چونکہ فتنوں کا خوف ہے اس لیے تنہا سفر سے احتیاط بہتر ہے۔ تبلیغ کی ذمہ داری کا بوجھ عورت پر لادا نہیں گیا ہے۔ خیرالقرون کے دور سے اس کی مثال اور نظیر نہیں ملتی ہے۔ نیز فتنوں کی وجہ سے عورتوں کو محلہ کی مسجدوں میں بھی آنے سے روک دیا گیا ہے تو پھر ان فتنوں کے ہوتے ہوئے عورتیں تبلیغ کے لیے باہر کیسے جاسکتی ہیں؟ اس لیے اپنی ہی بستی میں اجتماع کرلیا کریں اور وہیں پر دین کا مذاکرہ کرلیا کریں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند