• معاشرت >> لباس و وضع قطع

    سوال نمبر: 48442

    عنوان: میں پینٹ شرٹ پہنتاہوں اور الحمد للہ اللہ کے فضل سے پانچ وقت نماز پڑھتاہوں، مجھے ایک نمازی حضرت جو بڑی عمر کے تھے ، نے کہا کہ پینٹ شرٹ مت پہنا کرو ، یہ ناجائز لباس ہے ، بدن کے خد وخال صاف نمایا ہوتے ہیں ۔ کیا اسلام میں پینٹ شرٹ پہننے کی گنجائش ہے؟ رہنمائی فرمائیں۔

    سوال: میں پینٹ شرٹ پہنتاہوں اور الحمد للہ اللہ کے فضل سے پانچ وقت نماز پڑھتاہوں، مجھے ایک نمازی حضرت جو بڑی عمر کے تھے ، نے کہا کہ پینٹ شرٹ مت پہنا کرو ، یہ ناجائز لباس ہے ، بدن کے خد وخال صاف نمایا ہوتے ہیں ۔ کیا اسلام میں پینٹ شرٹ پہننے کی گنجائش ہے؟ رہنمائی فرمائیں۔

    جواب نمبر: 48442

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 1349-1349/M=12/1434-U پینٹ شرٹ اگرچہ اب غیر قوم کا مخصوص لباس نہیں رہا اسی لیے اب حکم پہلے کی طرح سخت نہیں؛ لیکن یہ غیرمسنون لباس میں اب بھی داخل ہے اور اگر اتنا چست ہو کہ قابل ستر اعضاء کا حجم ظاہر ہو تو یہ مزید کراہت کا سبب ہے، اس لیے مسلمانوں کو ایسا لباس نہ پہننا چاہیے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند