• معاشرت >> لباس و وضع قطع

    سوال نمبر: 38058

    عنوان: ایک مشت سے کم داڑھی چھوٹی کرنا کیسا ہے؟اگر والدہ یہ کہے کہ داڑھی چھوٹی کرا دو اور ضد کرے تو کیا کرے؟داڑھی کے بارے میں شریعت ہمیں کیا حکم دیتی ہے؟

    سوال: ایک مشت سے کم داڑھی چھوٹی کرنا کیسا ہے؟اگر والدہ یہ کہے کہ داڑھی چھوٹی کرا دو اور ضد کرے تو کیا کرے؟داڑھی کے بارے میں شریعت ہمیں کیا حکم دیتی ہے؟

    جواب نمبر: 38058

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 602-512/B=5/1433 اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد ہے أنہکوا الشوارب وأعفوا اللحی، موچھیں بارک کراوٴ اور ڈاڑھی کو بڑھاوٴ، اس کی مقدار بعض دوسری حدیثوں سے ایک مشت تک معلوم ہوتی ہے، لہٰذا ایک مشت تک ڈاڑھی کا رکھنا واجب او راسلام کے شعار میں داخل ہوا۔ اس سے کم ڈاڑھی رکھنا فسق وفجور میں داخل ہے۔ والدین کا کہنا ماننا واجب ہے، لیکن اگر اللہ اور اس کے رسول کے فرمان کے خلاف والدین کوئی حکم دیں تو اس کا ماننا واجب نہیں ہے۔ لا طاعة لمخلوق في معصیة الخالق․


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند