• معاشرت >> لباس و وضع قطع

    سوال نمبر: 19363

    عنوان:

    حضرت میرا سوال یہ ہے کہ کیا مسلمان کے لیے پینٹ اور کوٹ پہنا بالکل حرام ہے یا کوئی گنجائش ہے؟

    سوال:

    حضرت میرا سوال یہ ہے کہ کیا مسلمان کے لیے پینٹ اور کوٹ پہنا بالکل حرام ہے یا کوئی گنجائش ہے؟

    جواب نمبر: 19363

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی(د): 193=169-2/1431

     

    پینٹ ٹخنہ سے نیچے لٹکانا حرام ہے اور ٹخنہ سے اوپر ہو تو بھی بعض دیگر خرابیوں کی بنا پر پہننا مکروہ ہے۔ مثلاً اس قدر چُست ہونا جس سے جسم کے اعضا کی ساخت وحجم ظاہر ہونا اور وضو کرنے طہارت لینے میں دشواری پیش آئے۔ نماز ادا کرنے کی نوبت آگئی تو ارکان نماز ادا کرنے میں دقت اور تکلف ہونا۔ ان امور کے ساتھ یہ صلحا کا لباس بھی نہیں ہے۔ شرٹ میں بھی بعض امور کراہت کے ہیں، مثلاً کہنیوں کا کھلا ہونا جو کہ نماز میں مکروہ ہے، نیز رکوع اور سجدہ کرتے وقت کبھی کولھے کے اوپر کمر کے بعض حصہ کا کھل جانا جس سے بسا اوقات نماز بھی فاسد ہوجاتی ہے۔ پس بدون شدید ضرورت پینٹ شرٹ پہننے سے احتراز کرنا چاہیے بوقت ضرورت گنجائش ہے، البتہ ٹخنے نہ ڈھکنے پائیں۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند