• معاشرت >> لباس و وضع قطع

    سوال نمبر: 157605

    عنوان: کیا مردوں کے لیے سرخ کپڑا پہننا جائز ہے؟

    سوال: کیا مردوں کے لیے سرخ کپڑا پہننا جائز ہے؟ (۲) ایک واقعہ سنا ہے کہ پیارے رسول (صلی اللہ علیہ وسلم) کے پاس ایک صحابی سرخ لباس میں آئے تو آپ (صلی اللہ علیہ وسلم) نے جواب نہ دیا۔

    جواب نمبر: 157605

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:402-349/D=4/1439

    (۱) مردوں کے لیے سرخ کپڑا پہننا جائز ہے زیادہ سے زیادہ مکروہ تنزیہی ہے، ہاں زعفرانی یا کُسم کے رنگ میں رنگا ہوا نہ ہو، وعن أبي حنیفة رحمہ اللہ لا بأس بالصبغ الأحمر والأسود کذا في فتاوی قاضیخان (ہندیہ: ج۵ص۳۳۲)

    (۲) یہ واقعہ ابوداوٴد میں ہے کہ ایک صحابی حضور صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس سے گذرے اور سلام کیا لیکن حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے جواب نہیں دیا، وہ سرخ رنگ کے جوڑے پہنے ہوئے تھے۔ (ابوداوٴد: ۲/۵۶۳)

    اس روایت کے بارے میں علماء نے لکھا ہے کہ یہ حدیث ضعیف ہے یا وہ کپڑا زرد اور گلابی رہا ہوگا، جیسا کہ ابوداوٴد ہی کی دوسری روایت ج۲ص۵۶۲میں ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند