• معاشرت >> لباس و وضع قطع

    سوال نمبر: 12439

    عنوان:

    حضرت کیا ٹوپی پہننے کو سنت کہہ سکتے ہیں ؟ او رسنت ہے تو اس کا حوالہعنایت فرماویں؟ (۲)پینٹ پہننا کیسا ہے؟ (۳)کیا جال کی ٹوپی پہننے میں یہودی کی مشابہت ہوتی ہے ؟

    سوال:

    حضرت کیا ٹوپی پہننے کو سنت کہہ سکتے ہیں ؟ او رسنت ہے تو اس کا حوالہعنایت فرماویں؟ (۲)پینٹ پہننا کیسا ہے؟ (۳)کیا جال کی ٹوپی پہننے میں یہودی کی مشابہت ہوتی ہے ؟

    جواب نمبر: 12439

    بسم الله الرحمن الرحيم

    فتوی: 902=758/د

     

    (۱) حضرت عبداللہ ابن عمر رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ نبی پاک صلی اللہ علیہ وسلم سفید ٹوپی پہنتے تھے، نیز حضرت رکانہ فرماتے ہیں حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ہمارے اور مشرکین کے مابین فرق ٹوپی پر عمامہ باندھنا ہے (ترمذی، ابوداوٴد، مشکاة)

    (۲) حضرت فرقد فرماتے ہیں کہ میں نے آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ کھانا کھایا، آپ کے سر مبارک پر سفید ٹوپی تھی (ابن سکن، سیرت:۷/۴۴۷)

    (۳) کبھی آپ صرف ٹوپی پہنے رہتے کبھی ٹوپی پر عمامہ باندھ لیتے اور کبھی صرف عمامہ ہوتا تھا۔

    (۴) حضرت ابوکبشہ رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ حضرات صحابہ کی ٹوپیاں گول سر سے چپکی ہوتی تھیں۔ (مشکاة شریف:۳۷۴) بحوالہ شماء کبری: ۱/۲۷۰) لہٰذا ان تمام روایات سے ثابت ہوا کہ ٹوپی پہننا سنت ہے اور حضور صلی اللہ علیہ وسلم سے ثابت ہے۔

    ۲- جس علاقہ میں پینٹ پہننا کفار فساق کا شعار ہو وہاں اس سے پرہیز کیا جائے او ر جہاں شعار نہ ہو سبھی استعمال کرتے ہوں وہاں کا یہ حکم نہیں ہے، لیکن ترک بہر حال اولیٰ وافضل ہے اور کسی بھی کپڑے سے جو انسان پہنے ہو اس سے ٹخنہ ڈھانکنا حرام ہے۔

    ۳- جالی کی ٹوپی پہننے میں یہودیوں کی مشابہت نہیں ہوتی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند